بی آر چوپڑا خاندانی،سماجی اور صاف ستھری فلمیں بنانے کیلئے مشہورہے

Updated: April 23, 2021, 1:10 PM IST | Agency | Mumbai

ہندستانی فلم انڈسٹری میں بی آر چوپڑاکو ایک ایسے فلمساز کے طور پر یاد کیا جائے گا جنہوں نےخاندانی، سماجی اور صاف ستھری فلمیں بناکر تقریباً ۵؍ دہائیوں تک فلم شائقین کے دلوں میں اپنی پہچان بنائے رکھی

BR Chopra .Picture:INN
بی آر چوپڑا ۔تصویر :آئی این این

ہندستانی فلم انڈسٹری میں بی آر چوپڑاکو ایک ایسے فلمساز کے طور پر یاد کیا جائے گا جنہوں نےخاندانی، سماجی اور صاف ستھری فلمیں بناکر تقریباً ۵؍ دہائیوں تک فلم شائقین کے دلوں میں اپنی پہچان بنائے رکھی۔۲۲؍ اپریل۱۹۱۴ءکوپنجاب کے لدھیانہ شہرمیں پیدا ہوئے بی آر چوپڑہ عرف بلدیو رائےچوپڑہ بچپن سے ہی فلموں میں کام کرکے شہرت کی بلندیوں پر پہنچنا چاہتے تھے۔انہوں نے لاہور کے گورنمنٹ کالج سے انگریزی ادب میں گریجویشن کیا۔بی آر چوپڑہ نے اپنا کیرئیرفلمی صحافی کے طور پر شروع کیا۔ فلم میگزین ’سنے ہیرالڈ‘ میں وہ فلموں کا تجزیہ لکھا کرتے تھے۔۱۹۴۹ءمیںانہوں نے فلم ’کروٹ‘ سےفلمسازی کے میدان میں قدم رکھا لیکن یہ فلم بری طرح فلاپ رہی۔انہوں نے۱۹۵۱ءمیں،اشوک کمار کی اداکاری سےسجی فلم ’افسانہ‘ کی ہدایت کاری کی۔اس فلم نے باکس آفس پر سلورجوبلی منائی اور وہ فلم انڈسٹری میں اپنی شناخت بنانے میں کامیاب رہے۔ بی آر چوپڑہ نے۱۹۵۵ءمیں بی آر فلمز کے  بینر  تلے سب سے پہلے فلم ’نیا دور‘ بنائی جس کے ذریعے انہوں نے  دور جدید اور دیہی ثقافت کے درمیان   ٹکراؤ کو سلور اسکرین پر پیش کیا جسے ناظرین نے کافی سراہا ۔ اس فلم نےکامیابی کے نئے ریکارڈقائم کئے۔
 ان کے بینر تلے بنی فلموں پر اگر ایک نظر ڈالی جائےتوان کی  زیادہ تر فلمیں سماج کو پیغام دینے والی ہوتی تھیں جس میں وہ ہمیشہ  ناظرین کو کچھ نیا دینا چاہتے تھے۔اسی کےپیش نظرانہوںنے۱۹۶۰ءمیں ایک فلم قانون بنائی جو فلم انڈسٹری میں ایک نیا تجربہ تھا۔ اس فلم میں ایک بھی نغمہ نہیں تھا۔ اپنےبھائی اورمشہورپروڈیوسر،ڈائریکٹر یش چوپڑا کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچانے میں بی آر چوپڑا کا اہم تعاون رہا ہے۔دھول کا پھول، وقت اور اتفاق جیسی فلموں کی کامیابی کے بعد ہی یش چوپڑا فلم انڈسٹری میں ڈائریکٹر کے طور پرمشہور  ہوئے تھے۔ معروف گلوکارہ آشا بھوسلے کو کامیابی کی بلندیوں  پر پہنچانے میں بی آر چوپڑہ نے اہم کردار نبھایا ہے۔ ۵۰ءکی دہائی میں جب آشا بھوسلے کو صرف بی اور سی گریڈکی فلموںمیںگلوکاری کاموقع ملتا تھا اس وقت انہوںنےآشا کی صلاحیت کو پہچانا اور اپنی فلم ’نیادور‘ میں گانےکاموقع دیا جو ان کے فلمی کریئرکی پہلی سپرہٹ فلم ثابت ہوئی۔اس فلم کے محمد رفیع اور آشا بھوسلےکی آوازمیں’مانگ کے ساتھ تمہارا‘،’اڑیں جب جب زلفیں تیری‘ جسے نغمات شائقین کے درمیان کافی مقبول ہوئے۔فلم ’نیا دور‘کی کامیابی کے بعدآشا بھوسلے کو اپنا صحیح مقام حاصل ہوا اس کے بعد انہوں نے اپنی بہت سی فلموں میںانہیں گانے کا موقع دیا۔ان میں وقت ، گمراہ، ہمراز، آدمی اور انسان اور دھند اہم فلمیں ہیں۔ آشا بھوسلےکے علاوہ مشہور گلوکارمہندرکپورکوبھی فلم انڈسٹری میںمستحکم کرنے میں ان کا اہم کردار رہا ہے۔ ۸۰ءکی دہائی میں خرابی صحت کی وجہ سے بی آر چوپڑہ نے فلمیں بنانا کم کردیا۔۱۹۸۵ءمیںانہوں چھوٹےپردہ کی جانب رخ کیا اور دوردرشن کی تاریخ میں اب تک سب سے کامیاب سیریل ’مہابھارت‘ بنایا۔ تقریباً ۹۶‘ فیصد ناظرین تک پہنچنے کے ساتھ اس سیریل نےاپنا نام گنیزبک آف ورلڈ ریکارڈ میں بھی درج کرایا ہے۔ بی آر چوپڑہ کو۱۹۹۸ءمیںہندی سنیماکے سرفہرست دادا صاحب پھالکے ایوارڈے نوازا گیا ۔ اس کے علاوہ ۱۹۶۰ء میں انہیں فلم ’قانون‘ کے لئے سرفہرست ڈائرکٹر کا فلم فیئر ایوارڈ بھی حاصل ہوا تھا۔ انہوں نے فلم پروڈکشن کے علاوہ ’باغبان اور بابل‘ جیسی فلموں کی کہانی بھی لکھی۔اپنی فلموں کے ذریعے ناظرین کے درمیان خصوصی شناخت بنانے والے بی آر چوپڑہ نومبر۲۰۰۸ءکواس دنیا سے رخصت ہوگئے۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK