مغربی بنگال سمیت ۱۴؍ ریاستوں میں ۳۰؍ اکتوبر کو ضمنی انتخابات کا اعلان

Updated: September 29, 2021, 12:01 PM IST | Agency | New Delhi

آسام میں پانچ، بنگال میں چار ، مدھیہ پردیش، میگھالیہ اور ہماچل پردیش میں تین ، راجستھان اور بہار میں ۲۔۲؍ اسمبلی حلقوں میں الیکشن ہوںگے

Mamata Banerjee.Picture:INN
ممتا بنرجی۔ تصویر: آئی این این

 الیکشن کمیشن نے ۱۴؍ ریاستوں میں ۳۰؍ اسمبلی اور تین لوک سبھا کے ضمنی انتخابات کیلئے منگل کو اعلان کردیا ۔ ان تمام جگہوں پر ۳۰؍ اکتوبر کو الیکشن ہوںگے۔  ان میں سے سب سے زیادہ نشستیں آسام کی ہیں جہاں ۵؍ انتخابی حلقوں میں پولنگ ہوگی جبکہ مغربی بنگال  میں ۴؍ حلقوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے۔ اسی طرح میگھالیہ، ہماچل پردیش اور مدھیہ پردیش میں تین تین ، راجستھان ، بہار اور کرناٹک میں ۲۔۲؍ اسمبلی حلقوں میں  الیکشن ہوں گے جبکہ بقیہ ریاستوں میں ایک ایک انتخابی حلقے میں پولنگ ہوگی۔ اس کے علاوہ جن تین لوک سبھا سیٹوں پر الیکشن ہوںگے، ان میں مدھیہ پردیش کی کھنڈوہ اور ہماچل پردیش کی منڈی کی سیٹ شامل ہے جبکہ تیسری سیٹ دادرا نگر حویلی کی ہے۔ ان تمام جگہوں پر نتائج کے اعلان ۲؍ نومبر کو ہوںگے۔ ان میں سے سب سے زیادہ نظر مغربی بنگال پر ہے جہاں چار سیٹوں پر الیکشن ہوں گے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ایک ماہ قبل یعنی ۳۰؍ ستمبر کو بھی یہاں ۳؍ سیٹوں پر ضمنی الیکشن ہورہے ہیں۔ ان میں سے ایک سیٹ پر ریاست کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی بھی امید وار ہیں۔ مغربی بنگال کے چار حلقوں میں جہاں الیکشن ہوںگے، وہ گوسابا ، شانتی پور ، دین ہاٹا اور کھردا ہیں۔گوسابا میں ترنمول کانگریس کے جینت ناسکرکی انتخاب جیتنے کے بعد موت ہوگئی تھی ،اسی طرح کھردہ میں نتائج کا اعلان ہونے سے قبل ترنمول کانگریس کے کاجل سنہاکی موت ہوگئی تھی جبکہ شانتی پور سے بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ جگن ناتھ سرکار نے انتخاب میں کامیابی حاصل کی تھی۔چوں کہ بی جے پی کی حکومت نہیں بنی، اسلئے انہوں نے رکن پارلیمنٹ رہنا ہی پسند کیا اور اسمبلی کی رکنیت سے استعفیٰ دیدیا۔کوچ بہار کے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ نشیت پرمانک نے دین ہاٹا سے کامیابی حاصل کی تھی۔ انہوں نے بھی اسمبلی کی رکنیت پارلیمنٹ کی رکنیت کو ترجیح دی اور اسمبلی سے استعفیٰ دے دیا۔ تلنگانہ کے حضورآباد اسمبلی حلقہ کا ضمنی انتخاب بھی اسی دن  ہوگا جس کا طویل عرصہ سے انتظارکیاجارہا تھا۔مرکزی الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ انتخابی شیڈول کے مطابق  یکم اکتوبر کو اعلامیہ جاری کیاجائے گا۔حلقہ حضورآباد کا ضمنی انتخاب ضروری ہوگیا تھا کیونکہ اراضیات پرغیر مجاز قبضوں کے الزامات پر کابینہ سے برطرف کئے جانے کے بعد سابق وزیر ای راجندر نے ٹی آرایس پارٹی کے ساتھ ساتھ اسمبلی کی رکنیت سے بھی استعفیٰ دے دیا تھا۔بعد ازاں انہوں نے بی جے پی میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔اسلئے اس پر لوگوں کی نگاہیں ہیں۔ کمیشن کے مطابق ان حلقوں میںکاغذات نامزدگی جمع کرانے کی آخری تاریخ۸؍ اکتوبر ہے جبکہ کاغذات نامزدگی واپس لینے کا آخری دن۱۳؍ اکتوبر ہے۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK