ہندوستان کی معیشت بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی معیشتوں میں سے ایک ہے

Updated: September 30, 2020, 11:48 AM IST | Agency | New Delhi

نوبیل انعام یافتہ ماہر معاشیات ابھیجیت بنرجی نےکہا ہے کہ ہندوستان کی معیشت دنیا کی بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی معیشتوں میں سے ایک ہے۔

Abhijeet Banerjee. Picture:INN
ابھیجیت بنرجی ۔ تصویر: آئی این این

نوبیل انعام یافتہ ماہر معاشیات ابھیجیت بنرجی نےکہا ہے کہ ہندوستان کی معیشت دنیا کی بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی معیشتوں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ مسائل سے نمٹنے کے لئے حکومت کا معاشی پیکیج کافی نہیں ہے۔ تاہم ، بنرجی نے کہا کہ جولائی تا ستمبر سہ ماہی میں ملک کی معاشی نمو کی شرح میں بہتری نظر آئے گی۔ ماہر معاشیات نے آن لائن پروگرام میں کہا کہ کووڈ۱۹؍ وبائی بیماری کے بحران سے پہلے ہی ملک کی معاشی نمو کی شرح سست پڑ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ’’ ہندوستانی معیشت دنیا کی بدترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی معیشتوں میں سے ایک ہے۔  لیکن موجودہ سہ ماہی (جولائی تا ستمبر) میں ملکی معیشت کیلئے نئی زندگی نظر آئے گی۔‘‘بنرجی نے کہا کہ۲۰۲۱ء میں معاشی نمو کی شرح اس سال سے بہتر ہوگی۔میساچوسٹس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی (ایف آئی ٹی) کے پروفیسر بنرجی نے کہا کہ وہ نہیں سوچتے کہ ہندوستان کا معاشی محرک پیکیج کافی ہے۔ انہوں نے کہا کہ’’ہندوستان کا معاشی محرک محدود تھا۔ یہ بینکوں کی طرف سے ایک مراعات تھا۔ مجھے لگتا ہے کہ ہم اور بھی کر سکتے تھے۔ مراعات یافتہ افراد نے کم آمدنی والے گروہوں کی کھپت پر اخراجات میں اضافہ نہیں کیا کیونکہ حکومت ان لوگوں کے ہاتھ میں پیسہ دینے کو تیار نہیں تھی۔‘‘ افراط زر پربنرجی نے کہا کہ ہندوستان کی ترقی کی حکمت عملی ایک بند معیشت ہے۔ اس میں حکومت بہت زیادہ طلب پیدا کرتی ہے ، جس سے افراط زر کے ساتھ ساتھ مہنگائی بھی بڑھتی  ہے۔ پچھلے۲۰؍ سالوں میں مستحکم اونچی افراط زر سے ملک کو بہت فائدہ ہوا ہے۔‘‘بنرجی نے کہا کہ ہندوستان کو عالمی سطح پر زیادہ مسابقتی ہونے کی ضرورت ہے۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK