بسلیری انٹرنیشنل فروخت ہوگی، ٹاٹا اور دیگر خریداری کی دوڑ میں

Updated: November 25, 2022, 10:08 AM IST | Agency | New Delhi

بوتل بند پانی فروخت کرنے والی کمپنی کے مالک رمیش چوہان نے فروختگی کی خبر کی تصدیق کی ، چوہان کی بیٹی جینتی چوہان کمپنی کی ذمہ داریاں سنبھالنے میں دلچسپی نہیں رکھتیں اس لئے ۸۸؍سالہ چوہان نے بسلیری انٹرنیشن کو فروخت کرنے کا اعلان کیا، ۷۷۰۰؍ کروڑ روپے میں سودا کئے جانے کا اندازہ ہے

Ramesh Chauhan, owner of Bisleri International during an event.Picture: Facebook, Bisleri
بسلیری انٹرنیشنل کے مالک رمیش چوہان ایک پروگرام کے دوران۔ تصویر: فیس بک، بسلیری

:بوتل بند پانی فروخت کرنے والی ملک کی مشہور کمپنی بسلیری فروخت ہوگی۔ ’بسلیری انٹرنیشنل‘ کی فروختگی کی تصدیق اسکے مالک رمیش چوہان نے بھی کردی ہے۔اس کمپنی کو خریدنے کیلئے  ٹاٹا کنزیومرس سمیت اہم کمپنیاں دوڑ میں شامل ہیں۔  پی ٹی آئی سے بات چیت کے دوران رمیش چوہان نے کہا کہ بسلیری انٹرنیشنل کو فروخت کرنے کیلئے کئی کمپنیوں سے بات چیت چل رہی ہے۔ ٹاٹا کے ساتھ ۷؍ہزار کروڑ روپے کا سودابھی زیر غور ہے۔
بسلیری انٹرنیشنل کیوں فروخت کی جارہی ہے؟
؍ ۸۲؍ سالہ رمیش چوہان کا اس ضمن میں کہنا ہے کہ بسلیر ی کے کاروبار کو وسعت دینے کے لئے انکے پاس کوئی جانشین نہیں ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ میری بیٹی جینتی کاروبار میں زیادہ دلچسپی نہیں رکھتی۔ بسلیری ہندوستان کی سب سے بڑی پیکجڈ واٹر کمپنی ہے ۔ سودے کے تحت موجودہ انتظامیہ ۲؍سال تک اپنی ذمہ داریاں نبھائے گا۔ 
 قبل ازیں اکنامک ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق چوہان نے کہا کہ ٹاٹا گروپ میرے کاروبارکی مزید بہتر طریقے سے دیکھ بھال کرے گا اور اسے آگے بڑھائے گا۔ مجھے ٹاٹا کا کلچر پسند ہے، اسلئے دیگر خریداروں کے باوجود میں نے ٹاٹا کو منتخب کیا ہے۔ کہاجاتا ہے کہ بسلیری کو خریدنے کے لئے ریلائنس ری ٹیل، نیسلے اور ڈینون سمیت کئی دعوے دار دوڑ میں ہیں۔
چوہان چیریٹی میں صرف کریں گے پیسہ
 رمیش چوہان نے کہا ہے کہ وہ بسلیری میں اپنا معمولی حصص بھی نہیں رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کاروبار کو فروخت کرنے کے بعد کمپنی میں مائناریٹی اسٹیک ہولڈ کرنے کا کوئی جواز نہیں بنتا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ وہ کاروباری دنیا سے باہر نکلنے کے بعد واٹر ہارویسٹنگ، پلاسٹک  ری سائیکلنگ جیسے ماحول دوست اورمخیرانہ کاموں پر توجہ دیں گے۔ 
ء  ۲۰۲۳ء میں ۲۲۰؍ کروڑ روپے کے منافع کا اندازہ!
 چوہان نے کہا کہ مالیاتی سال ۲۰۲۳ء کے لئے بسلیری برانڈ کا کاروبار ۲۲۰؍ کروڑ روپے کے منافع کے ساتھ ۲۵؍ہزار کروڑ روپے ہونے کا اندازہ ہے۔ مارچ ۲۰۲۱ء کو ختم مالیاتی سال میں کمپنی ۱۱۸۱ء۷؍ کروڑ روپے کی کل فروخت اور ۹۲؍ کروڑ روپے کا منافع درج کیا تھا۔ وہیں مارچ ۲۰۲۰ء کو ختم مالیاتی سال میں کمپنی کی آمدنی ۱۴۷۲؍ کروڑ روپے تھی اور ۱۰۰؍ کروڑ روپے کا منافع حاصل ہوا تھا۔
بسلیری کیسے بڑی کمپنی بنی
 خیال رہے کہ۱۷؍جون ۱۹۴۰ء کوممبئی میں جینتی لال اور جیا چوہان کے یہاں پیدا ہونے والےرمیش چوہان کوابتداء سے ہی کاروبار کا میدان پسند تھا۔ رمیش نے میکانیکل انجینئرنگ اور بزنس مینجمنٹ کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد  ۲۷؍  سال کی عمر میں منرل واٹر برانڈ’بسلیری‘ کو ہندوستان میں متعارف کرایا تھا۔ پارلے ایکسپورٹس  نے ۱۹۶۹ء میں اٹلی کے ایک بزنس مین سے بسلیری کو خریداتھا اور ہندوستان میں  منرل واٹر بیچنا شروع کیا تھا۔ ۵۰؍ سال سے زیادہ کے کریئر میں چوہان نے بسلیری کو منرل واٹر کا ہندوستان کا ٹاپ برانڈ بنادیا۔ چوہان نے پریمیم نیچرئل منرل واٹر برانڈ ویدیکا بھی بنایا ہے۔ اس کے علاوہ تھمس اپ، گولڈ اسپاٹ، سیٹرا، مازا اور لمکا جیسے کئی برانڈ کو بنانے والے بھی چوہان ہی ہیں۔ 
جینتی نےبسلیری سے کریئر شروع کیا لیکن اب وہ اسے آگے نہیں بڑھانا چاہتیں
 رمیش چوہان کی بیٹی جینتی نے ہائی اسکول کی پڑھائی مکمل کرنے کے بعد اعلیٰ تعلیم کیلئے بیرون ملک کا رخ کیا۔ جینتی نے لاس اینجلس کے فیشن انسٹی ٹیوٹ آف ڈیزائن اینڈ مرچنڈائزنگ  سے پروڈکٹ ڈیولپمنٹ  اورانسٹیوٹومارنگنو میلانو میں فیشن اسٹائلنگ کی تعلیم حاصل کی ہے۔ انہوں نے لندن کالج آف فیشن سے فیشن اسٹائلنگ اور فوٹوگرافی کا بھی کورس کیا ہے۔جینتی  بعد ازیں ۲۴؍ سال کی عمر میں بسلیری سے وابستہ ہوئیں۔ انہوں نے کمپنی کے دہلی آفس کا کاروبار سنبھالا، جہاں انہوں نے زمینی سطح پر شروعات کی ۔ انہوں نےفیکٹری کی تزئین کاری اور آٹومیشن کے کام کرائے۔ ۲۰۱۱ء میں انہوں نے ممبئی آفس کی ذمہ داریاں سنبھالیں۔ کمپنی کے کام کاج  کو بہتر بنانے میں بھی شامل رہیں۔ فی الوقت وہ کمپنی میں نائب چیئر پرسن ہیں۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK