وسئی ویرار میں کورونا میت کو تمام قبرستانوں میں تدفین کرنے کا حکم

Updated: July 31, 2020, 9:08 AM IST | Kazim Shaikh | Vasai

میونسپل کارپوریشن نے یہ بھی واضح کر دیا کہ کورونا میت کے جراثیم سے کسی کو کوئی نقصا ن نہیں پہنچتا

Vasai virar cemetery - Pic : INN
وسئی ویرار قبرستان ۔ تصویر : آئی این این

یہاں وسئی ویرار میونسپل کارپوریشن نے کورونا سے  ہونے والی اموات کی  تدفین کیلئے ایک نئی گائیڈ لائن جاری کرتے ہوئے  حکم دیا ہے کہ کورونا میت کو اب وسئی ویرار کے تمام علاقوں میں واقع تمام  قبرستانوں  میں دفن کیا جاسکتا ہے اور کورونا میت کے جراثیم سے کسی کو نقصان نہیں پہنچتا ہے ۔   وسئی جامع مسجد ٹرسٹ کے چیئر مین اور وسئی عیدگاہ قبرستان کے ٹرسٹی  ڈاکٹر نصیر احمد شیخ نے نمائندہ ٔانقلاب کوبتایاکہ کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کی تدفین کے لئے حکومت کی جانب سے جو گائیڈ لائن جاری کی گئی  ہے اُس پر عمل کر نے کیلئے و سئی ویرار کے  تمام قبرستانوں کو لیٹر بھیج  دیا گیا ہے ۔ ڈاکٹر نصیر احمد شیخ کا کہنا ہے کہ  کارپوریشن   نے پہلے کورونا میت دفن کرنے  کیلئے قبرستانوں میں جگہ  ریزرو کی تھی۔ اگر کسی کی موت کورونا  سے ہو  تی تو گھر والوں کو بھی  اس کی میت دفن کرنے نہیں دی جاتی تھی بلکہ  اسپتال   سے سیدھا میت قبرستان لے جائی جاتی اور میونسپل عملے   کی نگرانی میں اسے کورناکیلئے مختص کی گئی جگہ پر ہی دفن کیا جاتا تھا ۔
  انھوں نے کہا کہ شاید   اب یہ سلسلہ ختم ہو جائے کیونکہ جب کورونا میت کے جراثیم سے کسی کو نقصان نہیں پہنچتا ہے تو عام میت کی جگہ پر بھی اس کی تدفین کی جاسکتی ہے ۔  اب وسئی  ویر ار میونسپل کارپوریشن  کے کمشنر گنگا دھر ن  کی جانب سے  جامع مسجد ٹرسٹ  کو دیئے گئے حکم نامہ سے یہ ظاہر ہورہا  ہے کہ سپریم کورٹ کے آرڈر نمبر ( او او سی جے ، ایل ڈی ۔ ۴۶، آف ۲۰۲۰)حکم کے مطابق کورونا وائرس سے  ہونے والی اموات سے خارج ہونے والے  جراثیم دوسروں کو متاثر نہیں کرتے۔  لہٰذا تمام علاقائی قبرستانوں میں کورونا وائرس  کی میت دفن کرنے کا حکم دیا  گیا  ہے ۔
  اس حکم نامے میں اس بات کی وضاحت نہیں کی گئی ہے کہ کورونا میت کے رشتے   داروں کو دفن کرنے کیلئے میت دی جائے گی یا نہیں ۔  اس کے علاوہ یہ بھی وضاحت نہیں  ہے کہ کورونا میت کو پلاسٹک میںلپیٹ کر دی جائے گی یا گھر لے جا کر غسل اورکفن دفن کا اہتمام کیا جائے گا ۔حالانکہ  اس سے پہلے پلاسٹک میں لپیٹ کر  میت کو  دفن کرنے پرجامع مسجد ٹرسٹ نےاعتراض کیا تھا ۔   برسوں تک میت مٹی  میں تحلیل نہیں ہوتی ۔  
 اس ضمن میں وسئی ویرارمیونسپل کمشنر گنگا دھرن سے بھی متعدد مرتبہ رابطہ  قائم کرنے کی کوشش کی گئی مگر گفتگو نہیں ہوسکی ۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK