سہ رخی سیریزمیں ہندوستانی خواتین کی ہار

Updated: February 13, 2020, 10:42 AM IST | Agency | Melbourne

سلامی بلے باز اسمرتی مندھانا کی۶۶؍ رن کی آتشیں اننگز کے باوجود ہندوستان کو میزبان آسٹریلیا کے ہاتھوں سہ رخی خواتین ٹی ۲۰؍ سیریز کے خطابی مقابلے میں بدھ کو۱۱؍ رن سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

ہندوستانی خاتون کرکٹ ٹیم ۔ تصویر : آئی این این
ہندوستانی خاتون کرکٹ ٹیم ۔ تصویر : آئی این این

 میلبورن : سلامی بلے باز اسمرتی مندھانا کی۶۶؍ رن  کی آتشیں اننگز کے باوجود ہندوستان کو میزبان آسٹریلیا کے ہاتھوں سہ رخی خواتین ٹی ۲۰؍ سیریز کے خطابی مقابلے میں بدھ کو۱۱؍ رن سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ آسٹریلیا نے۲۰؍ اوور میں۶؍ وکٹ پر ۱۵۵؍ رن بنانے کے بعد ہندوستانی ٹیم کو۲۰؍ اوور میں۱۴۴؍ رن پر آؤٹ کرکے خطاب اپنے نام کر لیا۔ 
 اسمرتی مندھانا کو چھوڑ کر دوسرا کوئی ہندوستانی بلے باز وکٹ پر نہیں ٹک سکی۔  مندھانا نے ۳۷؍گیندوں میں۱۲؍چوکے اڑاتے ہوئے ۶۶؍ رن کی آتشیں اننگز کھیلی۔  وہ ۱۵؍ ویں اوور میں چوتھے بلے باز کی حیثیت سے۱۱۵؍رن  کے اسکور پر آؤٹ ہوئیں لیکن اس کے بعد کی بلے باز لیفٹ آرم اسپنر جیس جوناسن کے سامنے اعتراف کر گئی۔  جوناسن نے ۴؍ اوور میں صرف۱۲؍ رن پر۵؍ وکٹ لے کر ہندوستان کے مرکزی اور نچلے آرڈر کو منہدم کر دیا۔ 
 جوناسن نے آخری ۶؍ میں سے ۵؍ وکٹ لئے۔ انہیں اس کی کارکردگی کیلئے پلیئر آف دی میچ کا ایوارڈ ملا۔ آسٹریلیا کی اننگز میں ناقابل شکست ۷۱؍ رن بنانے والی اوپنر بیتھ موني کو پلیئر آف دی سیریز کا ایوارڈ دیا گیا۔ ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ہندوستان نے۱۵؍ سال کی نوجوان اوپنر شیفالي ورما کو جلد ہی گنوا دیا۔ شیفالي نے ۹؍ گیندوں میں ایک چوکے اور ایک چھکے کی مددسے ۱۰؍ رن بنائے۔ ان کا وکٹ۱۱؍رن  کے اسکور پر گرا۔ٹايلا ولےمنك نے شیفالي کا وکٹ لیا۔ 
 مندھانا اور رِچا گھوش نے دوسرے وکٹ کیلئے ۴۳؍ رن جوڑے۔ لیکن رچا ٹیم کے ۵۴؍ اور اس کے بعد جیمما راڈیگز۶۵؍رن  کے اسکور پر آؤٹ ہو گئیں۔  رِچا نے۲۳؍ گیندوں میں ۲؍ چوکوں کے سہارے ۱۷؍رن اور جیمما نے ۲؍ رن بنائے۔انابیل سدرلینڈ نے جیمما کا اور ولےمنك نے جیمما کا وکٹ لیا۔ 
 مندھانا اور کپتان هرمنپريت کور نے چوتھے وکٹ کیلئے ۵۰؍ رن جوڑ کر ہندوستان کیلئے جیت کی امیدیں جگا دیں  لیکن ۳؍رن کے وقفہ میں مندھانا اور هرمنپريت کے وکٹ گرنے سے ہندوستان کی امیدیں منہدم ہو گئیں۔ مندھانا کو میگن شٹ نے آؤٹ کیا جبکہ جوناسن نے هرمنپريت کو ایل بی ڈبلیو کر دیا۔ هرمنپريت نے ۱۶؍ گیندوں پر۱۴؍ رن میں ۲؍ چوکے لگائے۔ 
 جوناسن نے هرمنپريت کو آؤٹ کرنے کے۲؍گیند بعد ہی اروندھتی ریڈی کو بھی آؤٹ کر دیا۔ہندوستان کا اسکور ایک جھٹکے میں  ۶؍وکٹ پر۱۱۸؍رن ہو گیا۔ جوناسن نے پھر رادھا یادو (۲)، تانیہ بھاٹیہ (۱۱) اور دپتی شرما (۱۰) کے وکٹ لے کر ہندوستانی اننگز سمیٹ دی۔ شکھا پانڈے (۴) کو ایلس پیری نے آؤٹ کیا۔ آسٹریلیا کی جانب سے جوناسن کے ۵؍ وکٹ کے علاوہ ولےمنك نے۳۲؍  رن پر ۲؍ وکٹ، پیری نے۱۹؍ رن پر ایک وکٹ، شٹ نے۲۸؍ رن پر ایک وکٹ اور سدرلینڈ نے ۲۱؍ رن پر ایک وکٹ لیا۔
 اس سے قبل آسٹریلیا کی اننگز میں اوپنر موني نے۵۴؍ گیندوں میں ۹؍چوکوں کی مدد سےناٹ آؤٹ ۷۱؍ رن بنا کر اپنی ٹیم کی اننگز کو سنبھالے رکھا اور اسے مضبوط اسکور تک پہنچایا۔ موني نے یلسا هلي (۴؍رن) کا وکٹ ۴؍رن  کے اسکور پر پہلے اوور میں گرنے کے بعد ایشلے گارڈنر (۲۶؍ رن) کے ساتھ دوسرے وکٹ  کیلئے۵۲؍رن اور کپتان میگ لیننگ (۲۶؍رن ) کے ساتھ تیسرے وکٹ کیلئے ۵۱؍رن جوڑے۔
 ہندوستان نے لوٹتے ہوئے آسٹریلیا کے ۵؍ وکٹ۱۲۱؍ رن تک گرا دیئے تھے۔لیکن موني نے ریچیل ہینس(۱۸) کے ساتھ چھٹے وکٹ کیلئے صرف۱۳؍ گیندوں میں۳۰؍ رن کی اہم شراکت کرکے آسٹریلیا کے اسکورکو  ۱۵۵؍ رن  تک پہنچا دیا۔ یہ شراکت آخر میں نتائج کے لحاظ سے اہم ثابت ہوئی۔
 ہینس نے ۷؍گیندوں پر۱۸؍ رن کی اننگز میں ۲؍ چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ هینس نے راجیشوري گائيكواڈکی اننگز کے آخری اوور میں تیسری اور چوتھی گیند پر چوکا اور چھکا لگایا جبکہ موني نے پہلی اور آخری گیند پر چوکے لگائے۔ اس اوور میں۱۹؍ رن پڑے جو میچ میں فیصلہ کن ثابت ہوئے۔ ہندوستان کی طرف سے پرتبھا نے ۳۰؍ رن پر۲؍ وکٹ، گائيكواڈ نے۳۲؍ رن پر ۲؍ وکٹ، رادھا یادو نے۳۵؍رن پر ایک وکٹ اور اروندھتی نے۳۱؍ رن پر ایک وکٹ لیا۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK