لوئیس ہملٹن فارمولاوَن کی برٹش گراں پری میں کامیاب لیکن نسلی تعصب کا شکار

Updated: July 20, 2021, 1:49 PM IST | Agency | London

فارمولا ون کے ڈرائیور لوئیس ہملٹن کو آن لائن نسل پرستانہ حملوں کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ یورو کپ ۲۰۲۰ء کے فائنل میں انگلش ٹیم کی حالیہ ناکامی کے بعد سیاہ فام انگلش کھلاڑیوں کو بھی ایسے ہی حملوں کانشانہ بنایا گیا تھا۔

Lewis Hamilton .Picture:INN
لوئیس ہملٹن۔تصویر :آئی این این

فارمولا ون کے ڈرائیور لوئیس  ہملٹن  کو آن لائن نسل پرستانہ حملوں کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ یورو کپ ۲۰۲۰ء کے فائنل میں انگلش ٹیم کی حالیہ ناکامی کے بعد سیاہ فام انگلش کھلاڑیوں کو بھی ایسے ہی حملوں کانشانہ بنایا گیا تھا۔۷؍مرتبہ کے عالمی چمپئن  کا اعزاز حاصل کرنے والے اسٹار ڈرائیور لوئیس  ہملٹن  نے اتوار کو برٹش گراں پری میں شاندار کامیابی حاصل کی اور خطاب اپنے نام کر لیا تاہم اس کے باوجود مرسڈیز کے برطانوی ڈرائیور کو آن لائن نسل پرستانہ جملوں کا نشانہ بنایا گیا۔ برطانوی میڈیا کے مطابق برٹش گراں پری میں کامیابی کے کچھ گھنٹے بعد ہی سوشل میڈیا پر سیاہ فام برطانوی شہری ہملٹن کے خلاف نسلی تعصب پر مبنی جملے لکھے گئے جبکہ ساتھ ہی بندر کی اموجیز بھی استعمال کی گئیں۔ اسکائی نیوز نے بتایا ہے کہ مرسڈیز ٹیم کے انسٹا گرام اکاؤنٹ پر ۳۶؍ سالہ ہملٹن  کے نام پیغامات ارسال کیے گئے، جو نسل پرستانہ نوعیت کے تھے۔ بتایا گیا ہے کہ کئی جوابات میں اس سوشل میڈیا ویب سائٹ کے صارفین نے بندر کی اموجیز بھی لگادیں۔ اس واقعے کے بعد خبر رساں ادارے روئٹرس نے مزید حقائق جاننے کی خاطر فیس بک کی ملکیت والے سوشل میڈیا پلیٹ فارم انسٹا گرام سے رابطہ کیا مگر فوری طور پر کوئی جواب موصول نہیں ہوا۔برٹش میڈیا نے ہملٹن کے خلاف ہونے والے ان آن لائن تعصبانہ فقروں کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اسی طرح سوشل میڈیا پر صارفین کی ایک بڑی تعداد نے بھی نسل پرستی کے خلاف آواز بلند کرتے ہوئے اسے ناقابل قبول اور ناقابل برداشت قرار دیا ہے۔ لوئیس  ہملٹن سماجی مساوات کے لیے آواز بلند کرتے رہتے ہیں جبکہ ’بلیک لائیوز میٹر‘ (سیاہ فاموں کی زندگی بھی اہم ہے) تحریک کے بھی حامی ہیں۔ نسل پرستی کے خلاف وہ ایک اہم آواز قرار دئیے جاتے ہیں۔ برٹش گراں پری سے قبل ہملٹن  نے کہا تھا کہ فٹبال کی یورپی چمپئن  شپ یورو کپ۲۰۲۰ء کے فائنل میں انگلش ٹیم کی شکست کے بعد نسل پرستی کا نشانہ بننے والے کھلاڑیوں کا ردعمل ان کے لیے حوصلہ افزائی کا باعث بنا تھا۔متذکرہ فٹبال میچ میں اٹلی نے انگلینڈ کو پنالٹی  شوٹ آؤٹ میں شکست دے دی تھی۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK