اول نمبر جوکووچ کا دوسرافرینچ اوپن، ۱۹؍واں گرینڈ سلیم خطاب

Updated: June 15, 2021, 2:14 PM IST | Agency | Paris

فرینچ اوپن کے فائنل میں جوکووچ نے ستسپاس کو ۵؍سیٹوں میں شکست دی ۔ جوکووچ نے اوپن دور میں ہر گرینڈ سلیم ۲؍مرتبہ جیتنے کا ریکارڈ بھی بنایا۔  میراتھن مین کے نام سے مشہور دنیا کے نمبر وَن کھلاڑی سربیا کے نوواک جوکووچ نے ۵؍ویں سیڈیافتہ  یونان کے استیفانوس ستسپاس کے سخت چیلنج کو اتوار کی رات۴؍ گھنٹے ۱۱؍ منٹ میں۷۔۶، ۶۔۲، ۳۔۶، ۲۔۶، ۴۔۶؍سے قابو پاتے ہوئے سال کے دوسرے گرینڈ سلیم فرینچ اوپن کا خطاب جیت لیا۔  

Novak Djokovic .Picture :INN
نوواک جوکووچ ۔تصویر:آئی این این

 میراتھن مین کے نام سے مشہور دنیا کے نمبر وَن کھلاڑی سربیا کے نوواک جوکووچ نے ۵؍ویں سیڈیافتہ  یونان کے استیفانوس ستسپاس کے سخت چیلنج کو اتوار کی رات۴؍ گھنٹے ۱۱؍ منٹ میں۷۔۶، ۶۔۲، ۳۔۶، ۲۔۶، ۴۔۶؍سے قابو پاتے ہوئے سال کے دوسرے گرینڈ سلیم فرینچ اوپن کا خطاب جیت لیا۔  جوکووچ کا یہ۱۹؍واں گرینڈ سلیم خطاب ہے اور اس کے ساتھ ہی وہ تما م گرینڈ سلیم دو دو بار جیتنے والے اوپن  دور کے  پہلے اور دنیا کے تیسرے کھلاڑی بن گئے ہیں۔ جووکوچ نے کوارٹر فائنل میں اٹلی کے لارینجوموسیٹی سے پہلے ۲؍ سیٹ میں شکست  کے بعد مقابلہ  کرتے ہوئے ۵؍ سیٹوں میں، سیمی فائنل میں تیسری سیڈ اور۱۳؍بار کے فرنیچ اوپن  چمپئن اسپین کے رافیل ندال سے  پہلا سیٹ ہارنے کے بعد ۴؍ سیٹوں میں اور فائنل میں ۵؍ویں سیڈیافتہ ستسپاس سے پہلے دو سیٹ ہارنے کے بعدمقابلہ  کرتے ہوئے ۵؍ سیٹوں میں شکست دی۔  جوکووچ کے ۲۔۲؍بار تمام گرینڈ سلیم خطاب جیتنے کی کامیابی اس سے پہلے دنیا کے ۲؍ اور کھلاڑیوں رائے ایمرسن اور روڈ لیور کو حاصل تھی۔ جوکووچ اپنے۱۹؍ویں گرینڈ سلیم خطاب سے اب سوئزرلینڈ کے راجر فیڈرر اور اسپین کے ندال کے ۲۰۔۲۰؍گرینڈ سلیم خطابوں کے عالمی ریکارڈ سے محض ایک گرینڈ سلیم پیچھے رہ گئے ہیں۔ سربیائی کھلاڑی نے اس سے پہلے رولا  گیرو  میں۲۰۱۶ء خطاب جیتا تھا۔ دنیا کے نمبر کاایک کھلاڑی نے اس سیشن کی شروعات میں آسٹریلیائی اوپن کا خطاب ۹؍ویں بار جیتا تھا۔ ۲۰۱۶ءمیں جوکووچ۱۹۹۲ءمیں جم کوریئر کے بعد میلبورن اور پیرس کا ڈبل پورا کرنے والے  پہلے کھلاڑی اور لیور اور ایمرسن کے بعد یہ کامیابی حاصل کرنے والے تیسرے کھلاڑی بنے تھے۔
 جوکووچ کا۱۹؍ویں گرینڈ سلیم خطاب کا سفر آسان نہیں رہا تھا۔ کوارٹر فائنل میں موسیٹی نے پہلے دو سیٹ جیت کر جوکووچ کو چونکا دیا لیکن سربیائی کھلاڑی نے اگلے ۳؍ سیٹ جیت کر موسیٹی کو پرسکون کردیا تھا اور فیصلہ کن سیٹ میں صفر۔۴؍سے پچھڑنے کے بعد انہوں نے میچ ہی چھوڑ دیا۔ جوکووچ نے سیمی فائنل میں اعلی درجہ کے ٹینس کا مظاہرہ کرتے ہوئے ندال کو ۴؍گھنٹے ۱۱؍منٹ میں۶۔۳،۳۔۶،۶۔۷، ۲۔۶؍سے شکست دی۔
 پہلی بار گریند سلیم فائنل کھیلنے والے  ستسپاس نے پہلا سیٹ ٹائی بریکر میں  ۶۔۸؍سے جیت لیا اور دوسرے سیٹ پر بھی ۲۔۶؍سے قبضہ کرلیا۔ جب ایسا لگنے لگا کہ ستسپاس اس بار الٹ پھیر کریں گے تو  ٹاپ سیڈ جوکووچ نے تیسرے سیٹ سے ایسی لے پکڑی کہ پھر انہوں نے خطاب جیت کر  ہی دم لیا۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK