Inquilab Logo

آسٹریلیا کے بلے بازوں کو روکنا انگلش بولرس کا ہدف

Updated: June 08, 2024, 12:22 PM IST | Agency | Bridgetown

ٹی ۲۰؍ عالمی کپ میں آج کرکٹ کے ۲؍ پاور ہاؤس کا مقابلہ۔ آسٹریلیا کے بلے باز فارم میں ہیں اور انگلینڈ کیلئے مشکلات پیدا کرسکتے ہیں۔

England spinner Adeel Rashid. Photo: INN
انگلینڈ کے اسپنر عدیل رشید۔ تصویر : آئی این این

دفاعی چمپئن انگلینڈ کو سنیچر کو روایتی حریف آسٹریلیا کے خلاف ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ کے گروپ بی کے میچ میں اپنی بولنگ میں بہتری لانا ہوگی۔ انگلینڈ اور اسکاٹ لینڈ کے درمیان پہلا میچ بارش کے باعث منسوخ کر دیا گیا تھا لیکن اسکاٹ لینڈ نے ۱۰؍ اوورس میں بغیر کسی نقصان کے۹۰؍ رن بنالئے تھے۔ اس سے انگلینڈ کی گیندبازی کی کمزوری سامنے آئی گئی تھی۔
 اسکاٹ لینڈ کے اوپننگ بلے باز جارج منسی اور مائیکل جونس نے انگلینڈ کے تمام گیند بازوں کو آسانی سے کھیلا۔ ایسی صورتحال میں ڈیوڈ وارنر اور مارکس اسٹونیس جیسے خطرناک آسٹریلوی بلے باز ان پر آسانی سے دباؤ ڈال سکتے ہیں۔ ایک بار پھر توجہ جوفرا آرچر پر ہو گی جنہوں نے اسکاٹ لینڈ کے خلاف ۲؍ اوور میں۱۲؍  رن  دیئے۔ گیند بازوں کے علاوہ انگلینڈ کے بلے بازوں کو بھی ایک یونٹ کے طور پر اچھی کارکردگی پیش کرنی ہو گی۔ جوس بٹلر نے آئی پی ایل ۲۰۲۴ء میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ پیٹ کمنس کے بغیر بھی آسٹریلیا کے  گیندبازوں نے عمان کے خلاف شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ کمنس کی جگہ ناتھن ایلس کو شامل کیا گیا، جنہوں نے سن رائزرس حیدرآباد کو آئی پی ایل میں فائنل تک پہنچایاتھا۔

نیوزی لینڈ اور افغان ٹیم کا مقابلہ 
نیوزی لینڈ کی ٹیم سنیچر کو ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ کے گروپ سی کے میچ میں آئی پی ایل کے ستاروں سے بھری افغانستان کی ٹیم کے خلاف اپنی مہم کا آغاز کرے گی، تو اسے حریف کو کمتر سمجھنے کی غلطی سے گریز کرنا ہوگا۔ نیوزی لینڈ کو ایک سخت گروپ ملا ہے جس میں دو بار کی  چمپئن  میزبان ویسٹ انڈیز اور افغانستان جیسی مضبوط ٹیمیں شامل ہیں۔ بارش کے باعث پریکٹس سیشن منسوخ ہونے سے نیوزی لینڈ کی تیاریاں متاثر ہوئی ہیں۔ اسے پہلے ۲؍ میچوں میں افغانستان اور ویسٹ انڈیز سے کھیلنا ہے۔ افغانستان کی ٹیم یہاں پہلا میچ جیت کر حالات  سے اچھی طرح واقف ہو چکی ہے تاہم، نیوزی لینڈ کی طاقت آئی سی سی ٹورنامنٹس میں حالات کے مطابق تیزی سے ڈھالنے کی ان کی صلاحیت رہی ہے اور ٹیم نے گزشتہ چند برسوں میں مسلسل اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔ تجربہ کار کھلاڑیوں کے علاوہ اس میں فن ایلن اور راچن رویندر جیسے نوجوان کھلاڑی بھی ہیں۔ 

بنگلہ دیش اور سری لنکا میں روایتی حریفائی 
ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ میں بنگلہ دیش اور سری لنکا کے درمیان سنیچر کو مقابلہ ہوگا۔ دونوں کے درمیان گزشتہ سال ۶؍نومبر کو   کھیلا جانے والا ون ڈے ورلڈ کپ کا میچ تاریخ کے صفحات میں ایک خاص تقریب کیلئے درج کیا گیاتھا۔ سری لنکا کی اننگز کے دوران انجیلو میتھیوز کو ٹائم آؤٹ دیا گیا۔ بین الاقوامی کرکٹ میں یہ پہلا موقع تھا جب کسی بلے باز کا ٹائم آؤٹ ہوا۔اس لئے ان دونوں ٹیموں میں زبردست حریفائی ہے۔ اس کے بعد رواں سال مارچ میں دونوں ٹیموں کے درمیان ۳؍ میچوں کی ٹی ۲۰؍ سیریز کھیلی گئی تھی جو سری لنکا نے۱۔۲؍ سے جیت لی تھی۔ اس کے بعد سری لنکن ٹیم نے کلائی پر گھڑی کی طرف اشارہ کرکے `ٹائم آؤٹ  کا جشن منایا۔  ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ۲۰۲۴ء کے ۱۵؍ویں میچ میں۲۰۱۴ء کی چمپئن سری لنکا کا سب سے بڑا حریف بنگلہ دیش ہے۔سری لنکا اور بنگلہ دیش ٹی ۲۰؍ انٹرنیشنل میں ۱۶؍ بار آمنے سامنے ہوئے۔ اس دوران سری لنکا کی ٹیم نے۱۱؍ اور بنگلہ دیش کی ٹیم نے صرف۵؍ میچ جیتے ہیں۔ 

جنوبی افریقہ اور نیدرلینڈس آمنے سامنے 
جنوبی افریقہ نے بھلے ہی ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں سری لنکا کو شکست دی ہو لیکن سنیچر کو گروپ ڈی کے دوسرے میچ میں اسے نیدرلینڈس جیسی اچھی ٹیم کا سامنا ہے جو غیر متوقع طور پر کارکردگی پیش کر سکتی ہے۔ یہ ڈچ ٹیم ہی تھی جس نے گزشتہ سال۵۰؍ اوور کے ورلڈ کپ میں جنوبی افریقہ کو ۳۸؍ رن سے شکست دی تھی جس کے زخم اب بھی گہرے ہوں گے۔ ایڈن مارکرم کی قیادت میں جنوبی افریقی ٹیم اس بار اس شکست کا حساب برابرکرنا چاہے گی۔پہلے میچ میں سری لنکا کے خلاف فتح میں اینریچ نورتجے کے فارم نے ان کے حوصلے بلند کئے ہیں۔ آئی پی ایل میں  فارم سے باہر رہنے والے نورتجے نے نیویارک کی پچ پر اپنا  فارم دوبارہ حاصل کیا اور سری لنکا کے خلاف ۴؍ وکٹ حاصل کئے۔ جنوبی افریقہ کے پاس کگیسو ربادا اور نورتجے کی شکل میں تیز گیند بازوں کی بہترین جوڑی ہے جس سے ہالینڈ کے خلاف اچھی کارکردگی کی توقع کی جائے گی۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK