ٹیم میں دھونی کے رہتے ہوئے مجھے کم مواقع ملے: ساہا

Updated: May 23, 2021, 7:25 AM IST | New Delhi

کورونا سے صحت یاب ہونے والے وکٹ کیپر نے کہا : کھلاڑی کے کریئر میں اتارچڑھاؤ آتے رہتے ہیں

Indian cricket team wicketkeeper-batsman Radhiman Saha.Picture:PTI
ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپربلے باز ردھیمان ساہا تصویرپی ٹی آئی

:ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے وکٹ کیپربلے باز ردھیمان ساہا کا کہنا ہے کہ  انہیں مہندر سنگھ دھونی   کے رہتے ہوئے ٹیم میں زیادہ مواقع نہیں ملے تھے۔ ساہا حال ہی میں کووڈ۱۹؍سے صحت یاب ہوئے ہیں۔ معطل شدہ آئی پی ایل۲۰۱۹ء کے دوران وہ کورونا سے متاثر ہوئے تھے۔
 ساہا کو نیوزی لینڈ کے خلاف ورلڈ ٹیسٹ  چمپئن  شپ  اور انگلینڈ کے خلاف۵؍ میچوں کی سیریز کے لئے ہندوستانی ٹیم میں منتخب کیا گیا ہے۔ تاہم   اس سے پہلے  ساہا کو فٹنیس ٹیسٹ پاس کرنا پڑے گا کیونکہ وہ طویل عرصے سے قرنطین میں تھے۔ ساہا۲۶؍ مئی تک ممبئی میں ہندوستانی ٹیم میں شامل ہوں گے جہاں دیگر کھلاڑی قرنطین میں وقت گزار رہے ہیں۔ ٹیم انڈیا۲؍ جون کو دورۂ انگلینڈ کے لئے روانہ ہونے والی ہے۔۳۷؍سالہ ساہا نے بتایا’’جب دھونی بھائی (ایم ایس دھونی) ٹیم میں تھے تو مجھے زیادہ مواقعنہیں ملے تھے۔ میں نے  ۲۰۱۴ء کے آخر سے ۲۰۱۸ء تک کرکٹ کھیلا۔ اس کے بعد  زخمی ہوگیا۔ اس  دوران پارتھیو پٹیل اور رشبھ پنت  کو موقع ملا تھا۔ پنت نے اپنی صلاحیت کے  دم   پر ٹیم میں جگہ  بنائی  ہے۔  انہوںنے موقع کا فائدہ اٹھایا ہے۔ اب میں ایک بار پھر اپنی باری کا انتظار کر رہا ہوں۔ `
 ساہا انجری کے سبب ٹیم میں اندر اور باہر ہوتے رہےہیں  تاہم  ان کا کہنا ہے کہ چوٹ پر کسی کا کنٹرول نہیں ہے۔ ساہا نے کہا ’’`ہر پیشہ ور کھلاڑی کے کریئر میں اتار چڑھاؤ آتا ہے۔ چوٹ کسی بھی وقت لگ سکتی ہے۔ آپ بھووی (بھونیشور کمار) کی مثال لے سکتے ہیں۔ وہ چوٹ سے قبل ٹیم انڈیا کے لئے تمام فارمیٹوں میں کھیل رہے تھے۔ اب ان کا کھیل چوٹ سے متاثر ہوا ہے۔ ہندوستان اورنیوزی لینڈ کے درمیان ورلڈ ٹیسٹ سیریز کا فائنل ۱۸؍جون سے ساؤتھمپٹن ​​میں کھیلا جائے گا۔ اس کے بعد ٹیم انڈیا۶؍ اگست سے میزبان انگلینڈ کے ساتھ ۵؍ میچوں کی ٹیسٹ سیریز کھیلے گی۔

saha Tags

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK