اپوزیشن متحد، تیور سخت، مودی سرکارکو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردینے کا عزم

Updated: July 29, 2021, 8:04 AM IST | New Delhi

پیگاسس اسکینڈل کے خلاف ۱۴؍ پارٹیاں متحد، مشترکہ حکمت عملی تیار،   مودی یا امیت شاہ کی موجودگی میںبحث اور کورٹ کی نگرانی میں جانچ کا مطالبہ، راہل گاندھی نے پوچھا : حکومت نے پیگاسس خریدا ہے یا نہیں؟

Rahul Gandhi addressing the press along with members of the opposition parties. (PTI)
راہل گاندھی ۱۴؍ اپوزیشن پارٹیوں  کےا راکین کے ساتھ پریس سے خطاب کرتے ہوئے۔ (پی ٹی آئی)

 پیگاسس جاسوسی اسکینڈل پر بحث سے بچنے کی مودی حکومت کی  کوششوں   کے خلاف  اپوزیشن    نے نہ صرف اپنے تیور سخت کرلئے ہیں بلکہ کانگریس کی قیادت میں  متحد ہوکر بدھو کو اس عزم کااظہار بھی کیا کہ اسے مودی یا امیت شاہ کی موجودگی میں اس موضوع پر پارلیمنٹ  میں بحث   اور سپریم کورٹ کی نگرانی میں   جانچ سے کم کچھ بھی منظور نہیں۔ راہل گاندھی نے اپوزیشن کی ۱۴؍ پارٹیوں کی قیادت کرتے ہوئے حکومت کے اس الزام کو مسترد کردیا کہ  اپوزیشن پارلیمنٹ کی کارروائی نہیں چلنے دے رہا۔ انہوں  نے کہا کہ پیگاسس کے خلاف  آواز بلند کرکے   حزب اختلاف اپنی ذمہ داری نبھارہاہے۔ 
۱۴؍ پارٹیوں کی میٹنگ، تیور سخت
  اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ پارلیمنٹ میں  اپوزیشن کی آواز دبانے کی کوشش کی جارہی ہے، کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے الزام لگایا کہ مودی اور امیت شاہ ’’ہندوستان اور اس کے اداروں کے خلاف پیگاسس کا استعمال کر کے ‘‘  پوری دنیا میں ملک کی شبیہ کو خراب کررہے ہیں۔  اسے ’’ملک مخالف حرکت‘‘ قرار دیتے ہوئے  راہل گاندھی نے  ۱۴؍ پارٹیوں کے لیڈروں کے ساتھ پریس کانفرنس سے خطاب کیا اور کہا کہ ’’اپوزیشن صرف یہ جاننا چاہتا ہے کہ حکومت نے پیگاسس خریدا یا نہیں؟‘‘ ’ہاں ‘یا ’نہ ‘میں جواب کا مطالبہ کرتے ہوئے راہل گاندھی نے سوال کیا کہ ’’کیا حکومت نے اپنے ہی لوگوں کے خلاف پیگاسس کا استعمال کیا؟ ‘‘ 
 پارلیمنٹ میں بحث سے انکار کیوں؟
 یہ بتاتے ہوئے کہ ’’حکومت نے ہم سے صاف کہا ہے کہ ایوان میں پیگاسس پر کوئی بحث نہیں ہوگی‘‘ راہل گاندھی نے سوالیہ انداز میں کہا کہ ’’میں اس ملک کے  نوجوانوں سے جاننا چاہتا ہوں... نریندر مودی جی نے آپ کے موبائل میں  ایک ہتھیار ڈال  دیا ہے۔ یہ ہتھیار میرے خلاف، سپریم کورٹ کے خلاف ، کئی لیڈروں ، صحافیوں اور سماجی کارکنان کے خلاف استعمال ہوا ہے۔ تو اس پر پارلیمنٹ میں بحث کیوں نہ ہو؟‘‘ انہوں نے کہا کہ ’’ہم صرف یہ پوچھ رہے  ہیں کہ کیا حکومت نے پیگاسس خرید کر ہندوستانیوں کی جاسوسی کی ہے؟‘‘
غداری اور ملک مخالف حرکت
   لوک سبھا اور راجیہ سبھا کی  ۱۴؍ اپوزیشن پارٹیوں  کے اراکین کی نمائندگی کرتے ہوئے    راہل گاندھی نے کہا کہ ’’یہ محض پرائیویسی کا معاملہ نہیں  ہے۔ ہمارے لئے یہ قومیت اور غداری کا معاملہ ہے۔ یہ ملک مخالف حرکت ہے۔مودی اور امیت شاہ نے ہندوستان اوران کے اداروں کے خلاف پیگاسس کا استعمال کرکے ہندوستانی کی جمہوریت کی روح کو تار تار کردیا ہے۔‘‘
  اپوزیشن  کے سخت تیوروں کا اعلان کرتے ہوئے راہل گاندھی  نے کہا  ہے کہ ’’پیگاسس، مہنگائی اور کسانوں  کے موضوع پر ہم کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے۔‘‘

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK