طلبہ کے آدھار کارڈ لنک کرنےکی ہدایت سے اساتذہ پریشان

Updated: September 23, 2021, 2:36 AM IST | Sadaat Khan | Mumbai

اسکول بندہونے سے والدین سے رابطہ نہیںکرپارہےہیں ۔ ۳۰؍ ستمبر تک آدھارکارڈ کی تفصیلات سرل پورٹل پر درج نہیں کی گئی تو امسال کئی ٹیچروں کے سرپلس ہونے کا اندیشہ

The Education Department has directed to enter the details of Aadhar card of the students on the simple portal. (File photo)
طلبہ کے آدھار کارڈ کی تفصیلات سرل پورٹل پردرج کرنے کی ہدایت محکمہ تعلیم نے دی ہے۔ (فائل فوٹو)

:ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ نے ۳۰؍ ستمبر تک اوّل تا بارہویں جماعت کے طلبہ کے آدھار کارڈ کی تفصیلات سرل پورٹل پر درج کرنے کی ہدایت جاری کی ہے جس کی بنیاد پر ہی امسال اسکولوںمیں اساتذہ کا انتخاب ( سنچ مانیتا )کیاجائے گا لیکن کوروناوائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے گزشتہ ڈیڑ ھ سال سے اسکول بندہیں اس لئے ہزاروں طلبہ اور ان کے والدین سے رابطہ نہیں ہوپا رہا ہے جس سے ہیڈماسٹرس اور اساتذہ پریشان ہیںاور امسال لاک ڈائون سے قبل اسکولوںمیں طلبہ کی جو تعداد تھی ،اس کی بنیادپر سنچ مانیتا کرنے کی اپیل کررہےہیں۔ 
 ریاست کے تمام اسکولوںکے ہیڈماسٹرس کو ۳۰؍ستمبر سےقبل تمام میڈیم کے طلبہ کے آدھار کارڈ کو سرل پورٹل پر لنک کرنےکی ہدایت جاری کی گئی ہے مگر ہیڈماسٹروںاو ر اساتذہ کیلئےاس مدت تک یہ کام مکمل کرنا مشکل نظر آرہا ہے۔ اس لئے ہیڈماسٹرس اور اساتذہ میں محکمۂ تعلیم کے اس فیصلہ سے ناراضگی پائی جارہی ہے ۔ اطلاع کے مطابق ابھی تک ریاستی سطح پر ۷۶؍فیصد طلبہ کے آدھار کارڈ کو سرل پورٹل پر اپ لوڈ کیاگیاہے۔کوروناوائرس کے سبب جہاں گزشتہ ڈیڑھ سال سے اسکول بند ہیں وہیں بےر و زگار ی کی وجہ سے پریشان حال بیشتر والدین اپنے بچوںکےساتھ شہر سے گائوں اور گائوں کی بےروزگاری کے سبب متعدد والدین دیگر شہر منتقل ہوگئے ہیں ۔ کچھ سرپرستوںنےجہاں بھی روزی روٹی کاذریعہ میسر آیاوہیں سکونت اختیارکرلی ہے۔ ایسے سرپرستوں او ر ان کے  بچوں سے گزشتہ ڈیڑھ سال سےاسکول کے ذ مہ داران رابطہ نہیں کرسکے ہیں۔ ان طلبہ کے گھروں پر جانے سےیا تو مقفل ملتے ہیں یااہل خانہ کے کسی اور مقام پر منتقل ہونے کی اطلاع ملتی ہے۔ متعدد والدین اور سرپرستو ں کا موبائل فون نمبر نہیں لگتاہے یا ان کے موبائل بند ہوگئےہیں۔ سرپرستوں اور طلبہ کے بارےمیں معلومات نہ ملنے سے اساتذہ اور ہیڈماسٹرس تشویش میں مبتلاہیں کیونکہ اگر ان طلبہ کے آدھار کارڈ کو سرل پورٹل سے لنک نہیں کیاگیاتو اسکولوں میں طلبہ کی تعداد کا کم ہونا یقینی ہے جس سے  اساتذہ کے سرپلس ہونے کاقوی امکان ہے۔ اس سے اساتذہ کی ملازمت پر برا اثر پڑسکتاہے ۔
  مہاراشٹر اسٹیٹ شکشک پریشد کے صدر وینوناتھ کڈو کےمطابق ’’اگر مقررہ مدت میں اساتذہ نے طلبہ کے آدھار کارڈ کی تفصیلات سرل پورٹل پر درج نہیں کی تو اسکولوںمیں طلبہ کی تعداد کاکم ہونا یقینی ہے جس سے اساتذہ کے سرپلس ہونے کا پورا امکان ہے۔ طلبہ کے آدھار کارڈ کولنک کرنے میں اساتذہ کو متعدد پریشانیوں کا سامنا کرناپڑرہاہے ۔ فی الحال کورونا وائرس  کےسبب اسکولوںکاجو حال ہے، اس سے ہم سب واقف ہیں لہٰذا سنچ مانیتا کیلئے محکمۂ تعلیم نے جو شرط عائد کی ہے، اسے واپس لیاجائے۔ یہی ہمارا مطالبہ ہے۔‘‘

school Tags

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK