سیریز جیتنا اہم نہیں ، ٹیم کے طور پر بہتر ہونا ہماری ترجیح ہے: روہت

Updated: August 11, 2022, 12:08 PM IST | Agency | Mumbai

ٹیم انڈیاکے کپتان نے کہا :ہم بہت زیادہ کرکٹ کھیلتے ہیں، اس لئے انجری اور کام کا بوجھ ہوگا، اس لئے ہمیں کھلاڑیوں کو تبدیل کرنا ہوگا اور نئے پلیئرس کو موقع دینا ہوگا

Rohit Sharma.Picture:INN
ٹیم کے کپتان روہت شرما۔ تصویر:آئی این این

ہندوستانی مردوں کی کرکٹ ٹیم کے کپتان روہت شرما نے ٹی۲۰؍ انٹرنیشنل میں ہندوستان کی حالیہ تبدیلی پر منگل کو کہا کہ ٹیم کا مقصد ہر روز بہتری لانا ہے۔اہم بات یہ ہے کہ گزشتہ سال منعقدہ ٹی۲۰؍ ورلڈ کپ۲۰۲۰ء میں ہندوستان کو گروپ مرحلے میں ہی باہر ہونے کے بعد تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ کھیل کے مختصر ترین فارمیٹ میں ہندوستانی ٹیم کی سست بلے بازی پر کئی سوالات اٹھتے رہے ہیں لیکن انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کے خلاف پچھلی دو سیریز میں ہندوستان نے بدلے ہوئے رویے کے ساتھ بیٹنگ کی ہے۔
 کپتان روہت نے اسٹار اسپورٹس کے پروگرام `فالو دی بلیوز سے بات کرتے ہوئے کہاکہ ’’میں نہیں جانتا کہ آگے کیا ہوگا، لیکن ایک ٹیم کے طور پر میرے لئے ہمارا مقصد ہے کہ ہم ہر دن بہتر ہوں، سیریز جیتنے اور ہارنے سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ ایک ٹیم کے طور پر بہتر ہونا ہماری ترجیح ہے۔ ٹیم جو بھی کرنے کی کوشش کر رہی ہے، کھلاڑیوں کو اس سوچ کے عمل میں حصہ لینے اور اس کیلئے کام کرنے کی ضرورت ہے۔‘‘ ٹیم انڈیا کے کپتان روہت نے کہا کہ ہم نے دبئی میں ہونے والے ٹی۲۰؍ ورلڈ کپ کے بعد یہ واضح کر دیا ہے کہ جب ہم (سیمی فائنل کے لئے) کوالیفائی نہیں کر پائے تھے تو ہمیں احساس ہوا کہ ہمارے کھیل کے انداز کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ لڑکوں کے لئے واضح پیغام اور وہ اس چیلنج کو قبول کرنے کے لئے تیار تھے۔ اس کے علاوہ ہمیں یہ یاد رکھنا چاہئے کہ جب آپ نئی چیزیں آزما رہے ہوں گے تو کچھ دھچکے ہوں گے۔ یہ نہیں کہ آپ ایک قدم پیچھے ہٹ جائیں۔گزشتہ سال کے ٹی ۲۰؍ ورلڈ کپ کے بعد سے ہندوستان اپنی ٹیم کے ساتھ تجربہ کرنے نہیں کترا رہا ہے۔ چوٹ اور کام کے بوجھ نے اگرچہ اس میں ایک کردار ادا کیا، روہت نے واضح کیا کہ وہ ایک مضبوط بینچ بنانا چاہتے ہیں جس سے ضرورت پڑنے پر ذمہ داری اٹھانے کیلئے کہا جا سکے۔
  روہت نے کہاکہ’’ہم بہت زیادہ کرکٹ کھیلتے ہیں، اس لئے  انجری اور کام کا بوجھ ہوگا، اس لئے ہمیں کھلاڑیوں کو تبدیل کرنا ہوگا۔ اس سے ہمارے بینچ کو کھیل کھیلنے کی طاقت ملتی ہے۔ اس لئے ہم بہت سے لوگوں کو آزما سکتے ہیں۔‘‘  
 ٹی۲۰؍ورلڈ کپ کے اختتام کے بعد ہندوستان کو ایک نئے کپتان کے علاوہ راہل دراوڑ کی شکل میں ایک نیا کوچ بھی ملا ہے۔ نئے کپتان اور کوچ کا رشتہ اتنا ہی پرانا ہے جتنا کہ روہت کے ون ڈے ڈیبیو میں جب دراوڑ ہندوستانی ٹیم کے کپتان تھے۔دراوڑ کے ساتھ اپنے تعلقات کے بارے میں روہت نے کہاکہ’’جب وہ کوچ بنے تو ہم کچھ دیر کے لئے  ایک کمرے میں ملے اور ساتھ بیٹھے۔ ہم نے فیصلہ کیا کہ ہم اس ٹیم کو کس طرح آگے لے جانا چاہتے ہیں۔ ان کے سوچنے کا عمل بھی بہت آگے نکل گیا۔ بالکل میری طرح۔ اس سے میرے لئے لڑکوں کو واضح پیغام بھیجنا آسان ہو گیا کیونکہ ٹیم کو ایک ہی سمت میں آگے لے جانے کیلئے کوچ اور کپتان کو ہمیشہ ایک پیج پر ہونا چاہئے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ ہم نے ایک چیز کا فیصلہ کیا ہے کہ ہم صحیح پیغام دینا چاہتے ہیں اور ہم ٹیم میں کوئی الجھن پیدا نہیں کرنا چاہتے، ہم نے اس کے بارے میں بات کی اور یقیناً ہم کرکٹ کا انداز بدلنا چاہتے تھے۔ ہم تینوں فارمیٹس میں ایک خاص طریقے سے کھیلنا چاہتے تھے اور وہ یہ سب قبول کرنے کیلئے تیار  تھے۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK