موسم ِ گرما میں پسینہ بہت آتا ہے، کیا کریں؟

Updated: April 20, 2021, 1:16 PM IST | Swati Sharma

چلچلاتی دھوپ اور گرم ہوا سے ہمارا برا حال ہوجاتا ہے۔ اس موسم میں پسینہ کا آنا عام بات ہے اور اس کی وجہ سے کئی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے مگر جسم میں پانی کی صحیح مقدار برقرار رکھ کر، صحت بخش غذا کا استعمال کرکے، سوتی اور ہلکے رنگ کے کپڑے پہن کر آپ کئی پریشانیوں سے بچ سکتی ہیں

Picture.Picture:INN
علامتی تصویر۔تصویر :آئی این این

گرمی میں ماتھے سے پسینے کا ٹپکنا.... اب گرمی ہے تو پسینہ تو آئے گا ہی۔ کچھ لوگوں کے لئے یہ عام بات ہوسکتی ہے لیکن ہر کسی کے لئے نہیں۔ کم پسینہ آنا تو ٹھیک ہے لیکن معاملہ حد سے زیادہ ہو جائے تو پریشانی لازمی ہے۔ یہ موسم چند خواتین کے لئے پریشانی کا سبب بن جاتا ہے۔ اگر آپ کو بھی ضرورت سے زیادہ پسینہ آتا ہے تو آپ کو پورا تجربہ ہوگا کہ ایسے میں آپ کو کس قسم کی پریشانی سے دو چار ہونا پڑتا ہے۔ مثلاً پسندیدہ کپڑے پہننے سے گریز، پسینے کی بدبو، جلد میں جلن، کھجلی وغیرہ۔ ایم ڈی ڈاکٹر نیہاں یادو کہتی ہیں کہ کچھ حد تک پسینہ آنا جسم کے لئے فائدہ مند ہے کیونکہ یہ جسم کے درجہ حرارت کو کم کرکے اسے نقصان پہنچانے سے بچاتا ہے۔ لیکن اگر پسینہ حد سے زیادہ آنے لگے تو یہ ایک سنگین مسئلہ ہوسکتا ہے۔ اگر آپ کو بھی یہ مسئلہ ہے تو چند معمولی طریقے آپ کو راحت پہنچا سکتے ہیں، جانیں وہ طریقے:
زیادہ پسینہ آنے کی یہ وجہ ہے
 اگر آپ کو کم پسینہ آتا تھا مگر اچانک سے زیادہ پسینہ آنے لگے تو آپ کو ہوشیار ہوجانا چاہئے۔ ایسے میں آپ کو امراض قلب کی شکایت، ہائپر ٹینشن یا ذیابیطس کی شکایت ہوسکتی ہے۔ اچانک پسینہ آنے پر بغیر دیر کئے ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہئے۔ لیکن اگر آپ کو پہلے بہت کم پسینہ آتا تھا اور کچھ وقت سے زیادہ آنے لگا ہو تو آپ ہارمون کی تبدیلی، تھائی رائیڈ، کولیسٹرول، ذیابیطس، امراض قلب جیسی بیماریوں کی زد میں آسکتے ہیں۔ خواتین کچھ دیگر صورتحال جیسے حمل کے دوران، مونو پوز وغیرہ بھی زیادہ پسینے کی پریشانی کا سامنا کرسکتی ہیں۔ اس صورتحال میں ڈاکٹر سے مشورہ ضرور لیں۔
خوراک بھی اثر انداز ہوتی ہے
 ہماری کھانے پینے کی عادت ہماری زندگی پر سب سے گہرا اثر ڈالتی ہے۔ بہتر زندگی کے لئے اچھی غذا ضروری ہے۔ غیر صحت بخش غذا خاص طور پر تلی ہوئی اشیاء زیادہ پسینہ کا سبب بنتی ہے۔ اس کے علاوہ زیادہ گوشت کھانے والے افراد کو بھی زیادہ پسینہ آنے کی شکایت رہتی ہے۔ گرم تاثیر والی غذا، زیادہ میٹھا اور مسالے دار کھانا بھی پسینہ زیادہ آنے کا سبب بن سکتا ہے۔ ایسے میں سب سے ضروری ہوتا ہے جسم میں پانی کی سطح کو برقرار رکھنا۔ اس لئے ایسی صورتحال میں آپ کو پانی کی بھرپور مقدار استعمال کرنے کی ضرورت ہے۔
برف کی سینکائی کام آئے گی
 کچھ برس پہلے تک میک اپ دیر تک قائم رکھنے کے لئے گرمیوں میں میک اپ لگانے سے پہلے چہرے کی برف سے سینکائی کی جاتی تھی۔ یہی نسخہ اپنا کر آپ کچھ دیر کے لئے پسینے سے بچ سکتی ہیں۔ یعنی آپ کو جس جگہ پر پسینہ زیادہ آتا ہے وہاں آپ برف سے سینکائی کرلیں، ایسا کرنے سے کچھ دیر کے لئے مسام سکڑ جاتے ہیں اور پسینہ کم آتا ہے۔
ٹیلکم پاؤڈر بھی کام آئے گا
 آپ پسینے والی جگہ پر ٹیلکم پاؤڈر سے کیکنگ کرسکتی ہیں۔ پاؤڈر نہ ہو تو آپ بیکنگ سوڈا کا استعمال کرسکتی ہیں۔ ایسا کرنے سے کچھ حد تک آپ کو پسینے کی پریشانی سے نجات مل جائے گی۔ مِنٹ والا پاؤڈر اس کام میں آپ کی زیادہ مدد کرے گا۔ اس کے علاوہ آپ پسینے والی جگہ پر لیموں کا رس لگا سکتی ہیں، ایسے میں پسینہ کم آئے گا ساتھ ہی اس کی بو سے بھی نجات مل جائے گی۔ آپ رول آن ڈی آرڈرن کا استعمال کرسکتی ہیں، جس سے پسینے کی جگہ پر کوٹنگ ہوجاتی ہے۔
سوتی کپڑا پہنیں
 گرمی کے موسم میں قدرتی فائبر والے کپڑے پہنیں۔ سوتی کپڑا ان میں سب سے بہتر ہوتا ہے۔ کاٹن کی ایک سے بڑھ کر ایک عمدہ قسم بازار میں دستیاب ہیں جو آپ کو خوبصورت لُک دینے میں اہم رول ادا کرے گا۔
ڈھیلے کپڑے پہنیں
 ڈھیلا کپڑا پہننا بھی فیشن ہے۔ اس لئے چست کپڑے سے گریز کرتے ہوئے آپ انہیں اپنائیں۔ ہاں! اپنے لُک میں چار چاند لگانے کے لئے آپ ایکسس سریز جیسے بیلٹ، اسکارف وغیرہ کا استعمال کرسکتی ہیں۔
رنگوں پر دھیان دیں
 رنگ بھی جسم کے درجہ حرارت کو متاثر کرتے ہیں۔ گہرا رنگ زیادہ حرارت جذب کرتا ہے۔ اس لئے آپ ہلکے رنگوں کے کپڑے پہنیں۔ بازار میں بے حد خوبصورت کول ٹون کے فلورل، ایبسٹرک پرنٹ موجود ہیں جو خاص طور پر گرمیوں میں رجحان میں ہیں۔ آپ دلکش نظر آنے کے لئے ان رنگوں کے ساتھ تجربہ کرسکتی ہیں۔ اگر گہرا رنگ پہننا چاہتی ہیں تو ہلکے رنگ کے کپڑے پر گہرے رنگ کا دوپٹہ، اسکارف، جیکٹ وغیرہ پہن سکتی ہیں۔ اس کے علاوہ سفید رنگ اس موسم میں سب سے بہتر متبادل ہے۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK