Inquilab Logo

رابرٹ کیوساکی کی مشہورکتاب’رِچ ڈیڈ پُووَر ڈیڈ‘سے ماخوذ ۸؍ اہم سبق

Updated: Dec 20, 2023, 4:53 PM IST | Tamanna Khan

رابرٹ کیوساکی کی مشہورکتاب’رِچ ڈیڈ پُووَر ڈیڈ‘ سے ۸؍سبق آموز باتیں جس سے آپ بہترین طرززندگی اختیار کرسکتےہیں۔ تصویر :آئی این این   

X بیشتر طلبہ کالج کی تعلیم تو مکمل کرلیتے ہیں لیکن وہ ’فائنانشیل اسکل‘سیکھ نہیں پاتے۔ وہ یہ تو سیکھ جاتے ہیںکہ پیسے کیسے کمانا ہے، لیکن انہیں اس کا کوئی آئیڈیا نہیں ہوتا کہ آمدنی دگنی کیسے کی جائے یا اسے کیسے خرچ کیا جائے۔ یادرکھئے کہ تعلیم کے ساتھ ساتھ آپ کو  ’فائنانشیل ایجوکیشن‘کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔
1/8

بیشتر طلبہ کالج کی تعلیم تو مکمل کرلیتے ہیں لیکن وہ ’فائنانشیل اسکل‘سیکھ نہیں پاتے۔ وہ یہ تو سیکھ جاتے ہیںکہ پیسے کیسے کمانا ہے، لیکن انہیں اس کا کوئی آئیڈیا نہیں ہوتا کہ آمدنی دگنی کیسے کی جائے یا اسے کیسے خرچ کیا جائے۔ یادرکھئے کہ تعلیم کے ساتھ ساتھ آپ کو  ’فائنانشیل ایجوکیشن‘کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔

X امیر اور غریب کے درمیان کے فرق کو سمجھئے۔ امیر کی نظر میں پہلے ضرورت، پھر سرمایہ کاری اور پھر چاہت /ارمان ہوتے ہیں۔ جبکہ غریب پہلے چاہت کو ترجیح دیتا ہے، پھر ضرورت اور آخرمیں سرمایہ کاری کی طرف جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ امیر اپنے پیسوں کو کام پر لگاتا ہے اور مڈل کلاس پیسوں کیلئے کام کرتا ہے۔
2/8

امیر اور غریب کے درمیان کے فرق کو سمجھئے۔ امیر کی نظر میں پہلے ضرورت، پھر سرمایہ کاری اور پھر چاہت /ارمان ہوتے ہیں۔ جبکہ غریب پہلے چاہت کو ترجیح دیتا ہے، پھر ضرورت اور آخرمیں سرمایہ کاری کی طرف جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ امیر اپنے پیسوں کو کام پر لگاتا ہے اور مڈل کلاس پیسوں کیلئے کام کرتا ہے۔

X اگر آپ امیر نہیں تو اس کیلئے اپنی فیملی کو ذمہ دار نہ مانیں، تسلیم کیجئے کہ آپ خود مسئلہ ہیں۔ جب یہ ہوگا تو یقین جانئے ماحول خود بخود بدلنے لگا۔ ان پر کام کیجئے: روزانہ مطالعہ کیجئے، بری عادتوں سے چھٹکارا پائیں، اسکلز کو بہتر بنائیں، اپنے اندر سےڈر و خوف نکالیں، کمفرٹ زون چھوڑئیے،لوگوں سے سیکھئے۔
3/8

اگر آپ امیر نہیں تو اس کیلئے اپنی فیملی کو ذمہ دار نہ مانیں، تسلیم کیجئے کہ آپ خود مسئلہ ہیں۔ جب یہ ہوگا تو یقین جانئے ماحول خود بخود بدلنے لگا۔ ان پر کام کیجئے: روزانہ مطالعہ کیجئے، بری عادتوں سے چھٹکارا پائیں، اسکلز کو بہتر بنائیں، اپنے اندر سےڈر و خوف نکالیں، کمفرٹ زون چھوڑئیے،لوگوں سے سیکھئے۔

X اگر آپ امیر بننا چاہتے ہیں تواکاؤنٹنگ پردھیان دیں۔ اثاثہ آپ کی آمدنی کا ذریعہ بنتا ہے، لائبلٹی آپ کی جیب پر بوجھ بنتی ہے۔ امیر افراد اثاثہ بڑھانے پر توجہ دیتے ہیں جبکہ غریب افراد اپنی خواہشات کو پوری کرنے میں لائبلٹیز (ایسی پرتعیش چیزیں جو خرچ کروائیں اور ان کی قدر بعد میں گھٹ جائے) بڑھاتے چلے جاتے ہیں۔
4/8

اگر آپ امیر بننا چاہتے ہیں تواکاؤنٹنگ پردھیان دیں۔ اثاثہ آپ کی آمدنی کا ذریعہ بنتا ہے، لائبلٹی آپ کی جیب پر بوجھ بنتی ہے۔ امیر افراد اثاثہ بڑھانے پر توجہ دیتے ہیں جبکہ غریب افراد اپنی خواہشات کو پوری کرنے میں لائبلٹیز (ایسی پرتعیش چیزیں جو خرچ کروائیں اور ان کی قدر بعد میں گھٹ جائے) بڑھاتے چلے جاتے ہیں۔

X اپنے پیشہ اور کاروبار میں کنفیوز نہ ہوں۔ آپ پہلے اپنے باس کیلئے کام کرتے ہیں پھر ٹیکس کی شکل میں حکومت کیلئے  اور آخر میں قرضوں (بینک ) کیلئے ۔ آپ بھول جاتے ہیں کہ اثاثے کا کالم بڑھانا ہے، آپ ملازمت کرتے ہوئے بھی اثاثہ بناسکتے ہیں، اس کیلئے آپ کو بچت سے کام لینا ہوگا۔
5/8

اپنے پیشہ اور کاروبار میں کنفیوز نہ ہوں۔ آپ پہلے اپنے باس کیلئے کام کرتے ہیں پھر ٹیکس کی شکل میں حکومت کیلئے  اور آخر میں قرضوں (بینک ) کیلئے ۔ آپ بھول جاتے ہیں کہ اثاثے کا کالم بڑھانا ہے، آپ ملازمت کرتے ہوئے بھی اثاثہ بناسکتے ہیں، اس کیلئے آپ کو بچت سے کام لینا ہوگا۔

X آپ کا دماغ آپ کا سب سے بڑا اثاثہ ہے۔ آج سے سوسال پہلے صنعت، دولت سمجھی جاتی تھی۔ آج معلومات ہی دولت ہے۔ اپنے دماغ کوان چیزوں کیلئے تربیت دیں: پیسے کیسے بڑھانا ہے، مواقع تلاش کرنا ہے، ذہین افراد کی خدمات حاصل کرنا ہے۔ سوچے سمجھے فیصلے کے ساتھ نپا تلا جوکھم لیجئے۔
6/8

آپ کا دماغ آپ کا سب سے بڑا اثاثہ ہے۔ آج سے سوسال پہلے صنعت، دولت سمجھی جاتی تھی۔ آج معلومات ہی دولت ہے۔ اپنے دماغ کوان چیزوں کیلئے تربیت دیں: پیسے کیسے بڑھانا ہے، مواقع تلاش کرنا ہے، ذہین افراد کی خدمات حاصل کرنا ہے۔ سوچے سمجھے فیصلے کے ساتھ نپا تلا جوکھم لیجئے۔

X یاد رکھئے کہ اسپیشلائزیشن تنخواہ دار کے لئے صحیح ہے، دولت مند  کے لئے نہیں۔ کام کیجئے سیکھنے کیلئے، نہ کہ کمانے کے لئے ۔ ایسی ملازمت کیجئے جس سے آپ کی کمیونی کیشن اسکل بہتر ہو، چیزیں کیسے فروخت کی جاتی ہیں، مارکٹنگ کی صلاحیت کیا ہیں، یہ سب دولت مند بننے میں کام آتے ہیں۔
7/8

یاد رکھئے کہ اسپیشلائزیشن تنخواہ دار کے لئے صحیح ہے، دولت مند  کے لئے نہیں۔ کام کیجئے سیکھنے کیلئے، نہ کہ کمانے کے لئے ۔ ایسی ملازمت کیجئے جس سے آپ کی کمیونی کیشن اسکل بہتر ہو، چیزیں کیسے فروخت کی جاتی ہیں، مارکٹنگ کی صلاحیت کیا ہیں، یہ سب دولت مند بننے میں کام آتے ہیں۔

X یہ تاریخ رہی ہے کہ غریب اور مڈل کلاس طبقہ ہی ٹیکس کی ضرب سہتا ہے۔ ٹیکس امیروں کی جیب سے پیسہ نکالنے کے بجائے غریب اور مڈل کلاس طبقہ سے ہی ٹیکس وصول کرتا ہے۔ یہ دنیا کا نظام بن گیا ہے کہ غریب اور مڈل کلاس خرچ سے پہلے ہی ٹیکس ادا کردیتے ہیں جبکہ امراء اخراجات کے بعد ٹیکس بھرتے ہیں۔
8/8

یہ تاریخ رہی ہے کہ غریب اور مڈل کلاس طبقہ ہی ٹیکس کی ضرب سہتا ہے۔ ٹیکس امیروں کی جیب سے پیسہ نکالنے کے بجائے غریب اور مڈل کلاس طبقہ سے ہی ٹیکس وصول کرتا ہے۔ یہ دنیا کا نظام بن گیا ہے کہ غریب اور مڈل کلاس خرچ سے پہلے ہی ٹیکس ادا کردیتے ہیں جبکہ امراء اخراجات کے بعد ٹیکس بھرتے ہیں۔

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK