رہائی ملتے ہی اعظم خان جوہر یونیورسٹی کو بچانے کیلئے سرگرم، سپریم کورٹ سے رجوع

Updated: May 24, 2022, 5:55 AM IST | Lucknow

پیر کو یوپی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کی ، رکنیت کا حلف لیا، میڈیا کو جیل کی رُوداد سنائی اور بتایا کہ جیل سے رہائی کے بعد ایک انسپکٹر نے انکاؤنٹر کی دھمکی دی

Azam Khan taking oath of membership in the chamber of Speaker Satish Mahana
اعظم خان اسپیکر ستیش مہانا کے چیمبر میں رکنیت کا حلف لیتے ہوئے

سماجوادی پارٹی کے قد آور لیڈر اعظم خان  جیل سے رہائی ملتے ہی جوہر یونیورسٹی کو بچانے کیلئے سرگرم ہوگئے ہیں۔ انہوں  نے ایڈوکیٹ نظام پاشا کی توسط سے سپریم کورٹ میں عرضی داخل کرتے ہوئے فوری شنوائی کی اپیل کی ہے۔ عرضی میں  ایک کیس  میں انہیں  دی جانے والی ضمانت کی ان  شرائط کو چیلنج کیا گیا ہے  جن کی روسے یونیورسٹی کو انہدام کا خطرہ ہے۔ 
اسمبلی  کے رکن کے طور پر حلف برداری
 اس دوران پیر کو اعظم خان نے یوپی اسمبلی  کے اجلاس میں شرکت کی اور  اپنے بیٹے عبداللہ اعظم  خان کے ساتھ رکنیت کا حلف لیا۔ اسمبلی  اسپیکر ستیش مہانا نے پیر سے شروع ہونے والے بجٹ اجلاس سے پہلے ایم ایل اے باپ بیٹے کو اپنے چیمبر میں اسمبلی کی رکنیت کا حلف دلایا۔مختلف مجرمانہ معاملوں میں سیتاپور جیل  میں ۲؍ سال تک  قید  رہنے کے بعد اعظم خان گزشتہ ہفتے رہا ہوئے ہیں۔ انہوں نے  جیل میں رہتے ہوئے  اسمبلی انتخابات میں رامپور شہر سے  فتح حاصل کی ۔اعظم  خان  کے بیٹے عبداللہ نے  رامپور ضلع کی ٹانڈا سیٹ سے اسمبلی الیکشن میں جیت حاصل کی ہے۔ 
جوہر یونیورسٹی کے تحفظ کیلئے پٹیشن
 واضح رہے کہ اعظم خان  اور ان کے ساتھی ملزمین پر ’انیمی پراپرٹی‘ قبضہ کرنے اور کروڑوں روپے سے زیادہ عوامی پیسے کا غلط استعمال کرنے کے معاملے میں ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔ ایف آئی آر میں یہ الزام تھا کہ تقسیم ہند کے دوران امام الدین قریشی نامی ایک شخص پاکستان چلا گیا  جس کے بعد اس کی زمین ’’ دشمن کی ملکیت‘‘ کے طور پر درج  ہوئی مگر  اعظم خان نے کئی لوگوں کے ساتھ مل کر اس پر قبضہ کر لیا۔ اس معاملے میں عدالت نے اعظم خان جو کو مشروط ضمانت دی ہے اس کی رو سے  ضلع مجسٹریٹ کو زمین کی پیمائش  اوراس کی چہار دیواری کھڑی کرنے نیز خار دار تار لگانےکا اختیار  دیا گیاہے۔ مجموعی طور پر ۳۰؍ جون سے پہلے پہلے مذکورہ زمین کو ضلع مجسٹریٹ کو مذکورہ زمین اپنے قبضے میں لینے کی ہدایت دی گئی ہے۔ اعظم خان نے ضمانت کی اس شرط کو چیلنج کیا ہے۔ 
اعظم خان کو انکاؤنٹر کی دھمکی  
 اس بیچ اتوار کی رات رامپور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اعظم خان نے بتایا کہ ایک انسپکٹر نے انہیں انکاؤنٹر کی دھمکی دی ہے۔ جیل کے ان کے سفر کے تعلق سے پوچھے گئے ایک سوال پر سماجوادی پارٹی کے لیڈر نے کہا کہ ’’جب ایک انسپکٹر جیل میں دھمکی دی سکتا ہے کہ انڈر گراؤنڈ رہو، تم پر بہت سے کیس ہیں، تمہارا انکاؤنٹر ہوسکتاہے تو پھر  ان خطرات کے بیش یہ بتایا مشکل ہے کہ میرا سفر کیسا رہا۔‘‘ واضح رہے کہ اعظم خان کو سپریم کورٹ نے اپنے خصوصی اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔

azam khan Tags

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK