سید مشتاق علی ٹرافی سے متعلق بورڈ افسر کے بیان پر گاوسکر برہم

Updated: March 22, 2020, 11:59 AM IST | Agency | New Delhi

گاوسکر نے کہا :بی سی سی آئی افسر کا یہ مشورہ صحیح نہیں ہے ، یہ اس کرکٹر کی بھی توہین ہے جن کے نام پر یہ ٹرافی کھیلی جاتی ہے

Sunil Gavaskar - Pic : INN
سنیل گاوسکر ۔ تصویر : آئی این این

سرکردہ ہندوستانی کرکٹر سنیل گاوسکر بی سی سی آئی کے ایک افسر کے اس بیان پر برہم ہوگئے  ہیں جس میں انہوں نے کہا تھا کہ آئی پی ایل کو مشتاق علی ٹرافی کی طرح ہوتے ہوئے نہیں دیکھ سکتے جس  میں غیر ملکی کھلاڑی حصہ نہیں لیں۔
  موذی کورونا  وائرس کی وجہ  سے انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) کا۱۳؍واں ایڈیشن فی الحال۱۵؍اپریل تک ملتوی کر دیا گیا ہے۔ آئی پی ایل ۱۳؍ کا آغاز ۲۹؍مارچ سے ہونا تھا، لیکن اس وبا کے خطرے کو دیکھتے ہوئے۱۵؍ اپریل تک ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اس دوران بی سی سی آئی کے ایک افسر نے کہا تھا کہ كووڈ۱۹؍ وبا کی وجہ سے آئی پی ایل میں غیر ملکی کرکٹرز کا حصہ لینا بہت مشکل نظر آ رہا هے۔خیال رہے کہ بی سی سی آئی کے صدر سورو گنگولی نے پہلے ہی واضح کردیا ہے کہ وہ حکومت کے ذریعہ دی جانے والی ہدایات پر عمل کریں گے اور  اس کے مطابق ہی آئی پی ایل کا شیڈول طے کیا جائے گا۔ 
  کریئر  میں۱۲۵؍ ٹیسٹ اور۱۰۸؍ ون ڈے انٹرنیشنل میچ کھیلنے والے گاوسکر نے  اسٹار اسپورٹس کیلئے  ایک کالم میں لکھاکہ  بی سی سی آئی افسر کا یہ مشورہ صحیح  نہیں ہے  علاوہ ازیں یہ اس کرکٹر کی بھی توہین ہے جن کے نام پر یہ ٹرافی کھیلی جاتی ہے۔ واضح رہے کہ آئی پی ایل میں غیر ملکی کرکٹ کھلاڑیوں کی مبینہ عدم شمولیت کے تناظر میں ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ کے ایک افسر کا  یہ مشورہ  تھا کہ بی سی سی آئی کو یہ  یقینی بنا نا ہوگا کہ آئی پی ایل کا معیار  نہ گرے اور یہ غریبوں والا ٹورنامنٹ نہیں لگے، ہم اسے مشتاق علی ٹورنامنٹ جیسا نہیں بنانا چاہتے ہیں۔ لٹل ماسٹر سنیل گاوسکر نے کہا کہ   اگر یہ بیان صحیح ہے تو بہت غلط ہے۔ یہ اس کرکٹر کی بھی توہین ہے جن کے نام پر یہ ٹرافی کھیلی جاتی ہے۔
 گاوسکر نے کہا کہ آئی پی ایل۲۰۲۰ء کے التوا سے متعلق ممبئی مرر کی ایک رپورٹ میں شائع ہونے والا یہ تبصرہ عظیم ہندوستانی کرکٹر سید مشتاق علی کی انتہائی توہین ہے۔سید مشتاق علی ٹرافی سیزن کے دوران کھیلا جانے والا گھریلو ٹی ۲۰؍ ٹورنامنٹ ہے اور اسے۲۰۱۹ء میں منعقد کیا جانا  تھا تا کہ تمام ریاستوں کے  نوجوان کھلاڑیوں کو آئی پی ایل نیلامی سے قبل اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے کا موقع ملے۔
 گاوسکر نے اعتراف کیا کہ غیر ملکی ستاروں کی موجودگی نے آئی پی ایل میں چار چاند لگادیئے ہیں  لیکن ان کا اصرار ہے کہ سید مشتاق علی ٹورنامنٹ میں کم دلچسپی  غیر ملکی کھلاڑیوں کی محض عدم موجودگی  نہیں ہے۔یہ تبصرہ بی سی سی آئی کے ایک نامعلوم عہدیدار نے مبینہ طور پر  ہندوستانی حکومت کی غیر ملکی شہریوں کے داخلے پر۱۵؍اپریل تک پابندی عائد کرنے کے تناظر میں دریافت کرنے پر کیا تھا ۔ گاوسکر نے اس تبصرے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اول ، یہ اس عظیم کرکٹ کھلاڑی  کی توہین ہے جس کے نام پر  یہ ٹورنامنٹ منعقد کیا جاتا ہے اور دوم یہ سوال اٹھتا ہے کہ اگر یہ اس طرح کا ’غریب ‘ٹورنامنٹ ہے تو پھر کیوں ؟ یقیناً  یہ محض اس لئے غریب نہیں ہے کہ اس میں کوئی بین الاقوامی کھلاڑی موجود نہیں ہے، بلکہ اس لئے بھی کہ اس میں ہندوستانی انٹرنیشنل کھلاڑی  موجود نہیں ہیں۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK