سلسلہ اور دل والے دلہنیا… کے خالق یش چوپڑہ کو ’کنگ آف رومانس‘ کہا جاتا ہے

Updated: September 27, 2022, 12:33 PM IST | Agency | Mumbai

بالی ووڈ کے مشہور فلم ساز یش چوپڑہ کو کنگ آف رومانس کےطور پر یاد کیا جاتاہے جنہوںنے رومانی فلوں کے ذریعہ ناظرین کے درمیان اپنی ایک خاص شناخت بنائی۔

Yash Chopra.Picture:INN
مشہور فلمساز یش چوپڑہ ۔ تصویر:آئی این این

بالی ووڈ کے مشہور فلم ساز یش چوپڑہ کو کنگ آف رومانس کےطور پر یاد کیا جاتاہے جنہوںنے رومانی فلوں کے ذریعہ ناظرین کے درمیان اپنی ایک خاص شناخت بنائی۔ پنجاب کےلاہورمیں ۲۷؍ستمبر ۱۹۳۲ء کو پیدا ہونے والے یش چوپڑہ کے بڑے بھائی بی آر چوپڑہ فلم انڈسٹری کے جانے مانے پروڈیوسر و ڈائرکٹر تھے۔اپنےکریئر کے شروعاتی دور میں یش چوپڑہ نےآئی ایس جوہر کے ساتھ بطور معاون کام کیا۔بطور ہدایت کاریش چوپڑہ نے اپنے سنیما کریئر کا آغاز ۱۹۵۹ءمیں اپنے بھائی کے بینر تلے بننے والی فلم ’دھول کا پھول‘ سے کیا ۔ ۱۹۶۱ءمیں یش چوپڑہ کو ایک بار پھر اپنے بھائی کے بینر تلے بنی فلم’ دھرم پتر‘کو ڈائرکٹ کرنے کا موقع ملا۔اس فلم  سےہی بطور اداکارششی کپور نے اپنےکریئر کا آغاز کیا تھا۔ ۱۹۶۵ء  میں یش چوپڑہ کی ہدایتکاری میں بننے والی  فلم ’وقت‘، بہترین فلموں میں شمارکی جاتی ہے۔اس فلم کو بالی ووڈ کی پہلی ملٹی اسٹارر فلم مانا جاتاہے۔’وقت ‘ میں بلر اج ساہنی،راج کمار،سنیل دت ،ششی کپور اور رحمٰن نے اہم رول ادا کئے تھے۔ ۱۹۷۳ءمیں آئی فلم ’داغ‘کے ذریعہ یش چوپڑہ نےفلم سازی کے شعبہ میں قدم رکھااور ’یش راج‘بینر کا قیام عمل میں آیا۔راجیش کھنہ،شرمیلا ٹیگور اور راکھی کی اداکاری والی یہ فلم ٹکٹ کھڑکی پر سپر ہٹ ثابت ہوئی۔۱۹۷۵ءمیں آنے والی فلم ’دیوار‘  اور یش چوپڑہ کے فلمی کریئر کیلئے میل کا پتھر ثابت ہوئی۔  ۱۹۷۶ءمیں یش چوپڑہ کی فلم ’کبھی کبھی‘آئی۔رومانی پس منظرپرمبنی اس فلم میں یش چوپڑہ نےاینگری ینگ مین امیتابھ بچن سے رومانی کردار کرواکر فلم ناظرین کو حیرت میں ڈال دیا۔سمجھا جاتاہے کہ یش چوپڑہ نےامیتابھ بچن کےذریعہ  شاعر اورنغمہ نگار ساحر لدھیانوی کی زندگی سے جڑے پہلوؤں کو پردۂ سیمیں پر پیش کیا تھا۔ ۱۹۸۱ء  میں آئی فلم ’سلسلہ‘یش چوپڑہ کی ہدایتکاری کی اہم فلموں  میں شمار کی جاتی ہے۔ ۱۹۸۹ءمیں سری دیوی اور رشی کپور کی اداکاری والی فلم’چاندنی‘کی کامیابی کے ساتھ یش چوپڑہ ایک بارپھرشہرت کی بلندیوں پر جاپہنچے۔ ۱۹۹۱ءمیںآئی ’لمحے‘یش چوپڑہ کے فلمی کریئرکی اہم فلموں میں شمار کی جاتی ہے۔اس فلم کے ذریعہ یش چوپڑہ نے یہ دکھانے کی کوشش کی کہ محبت کی کوئی عمر نہیں ہوتی ہے۔حالانکہ یہ فلم ناظرین کے معیار پر کھری نہیں اتری لیکن فلمی مبصرین کا ماننا ہے کہ یہ فلم یش چوپڑہ کے کریئر کی بہترین فلموں میں سے ایک ہے۔ ۱۹۹۵ءمیں یش چوپڑہ کے کریئر کی ایک اور سپر ہٹ فلم’دل والے دلہنیاں لے جائیں گے‘ آئی، نوجوانوںکی محبت پر مبنی کہانی شاہ رخ خاں کی بہترین اداکاری سےمزین یہ فلم سپر ہٹ ثابت ہوئی۔۱۹۹۷ءمیںآئی فلم ’دل تو پاگل ہے‘ یش چوپڑہ کی ایک اور شاندار فلم شمارکی جاتی ہے۔ مادھوری دکشت،شاہ رخ خان اور کرشمہ کپور کی محبت کےتکون پر مبنی اس فلم کے ذریعہ یش چوپڑہ نے فلم ناظرین کو یہ بتایا کہ جوڑی اوپر والے کی مرضی سے سورگ میں بنتی ہے۔اس فلم کے بعد بطور ہدایت کار یش چوپڑہ نے کچھ برسوں تک فلموں کی  ہدایتکاری بند کردی۔ ۲۰۰۴ءمیں آئی فلم ’ویر زارا‘سے یش چوپڑہ نےایک بار پھر ڈائرکشن میں قدم رکھا۔شاہ رخ خان اورپریٹی زنٹا کی اداکاری والی اس فلم کے ذریعہ یش چوپڑہ نےناظرین کو بتایا کہ محبت کوکسی ملک کی سرحد میں قیدنہیں رہ سکتی ہے۔اس فلم کی موسیقی سے جڑی دلچسپ کہانی یہ ہےآنجہانی مدن موہن کی۸؍دھنوں کو فلم میں استعمال کیا گیا۔یش چوپڑہ کواپنے فلمی کریئرمیں۱۱؍بار فلم فیئر ایوارڈ سے نوازا گیا۔فلم کے شعبہ میں نمایاں کام کرنے کے صلہ میں انہیں پروقار ’دادا صاحب پھالکے‘ ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔ یش چوپڑہ کی آخری فلم ’جب تک ہے جان ‘۲۰۱۲ءمیں آئی ۔اپنی فلموں کے ذریعہ ناظرین کو رومانس کا احساس کرانے والے یش چوپڑہ نے۲۱؍ اکتوبر ۲۰۱۲ءکو میں دنیا کو الوداع کہہ دیا۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK