ملک میں اکتوبر میں کوئلےکی پیداوارمیں ۱۸؍ فیصد کااضافہ،پیدوار۴۴ء۸؍ کروڑٹن ہوگئی

Updated: November 25, 2022, 10:27 AM IST | Agency | New Delhi

کوئلہ وزارت کے مطابق کوئلہ پروڈیوسر کول انڈیا لمیٹڈ (سی آئی ایل) کی پیداوار میں اضافہ بھی اکتوبر میں۱۷؍ فیصد سے زیادہ رہا

The target of coal production till the end of March 2023 is 4.5 crore tonnes.Picture:INN
مارچ۲۰۲۳ء کے آخر تک کوئلے کی پیداوارکا ہدف۴ء۵؍ کروڑ ٹن ہے۔ تصویر :آئی این این

 ملک میں کوئلے کی پیداوار اکتوبر میں۴۴ء۸؍ کروڑ ٹن رہی جو گزشتہ سال اکتوبر کے مقابلے۱۸؍ فیصد زیادہ ہے۔ کوئلہ وزارت کی جانب سے جمعرات کو جاری ایک ریلیز کے مطابق کوئلہ پروڈیوسر کول انڈیا لمیٹڈ (سی آئی ایل) کی پیداوار میں اضافہ بھی اکتوبر میں۱۷؍ فیصد سے زیادہ رہا۔ وزارت نے اس ماہ کے آخر تک گھریلو کوئلے سے چلنے والے تھرمل پاور پلانٹس کے لئے  ۳؍ کروڑ ٹن ایندھن کا ذخیرہ تیارکرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔۳۱؍ مارچ۲۰۲۳ء  کے آخر تک۴ء۵؍ کروڑ ٹن تک پہنچانے کا ہدف ہے۔ وزارت نے کہا ہے کہ سمندری راستوں سے کوئلے کی نقل وحرکت کو فروغ دینے کے لئے بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت، بجلی کی وزارت، وزارت ریلوے اور کوئلہ مشترکہ طورپرکام کر رہی ہیں۔بیان کے مطابق، ۲۰۲۲ء  کے پہلے ۷؍ مہینوں میں روزانہ اوسط ریک کی دستیابی میں۹؍ فیصد اضافہ درج کیا گیا ہے، جس سے کوئلے کی لوڈنگ میں اضافہ کرکے اسٹاک کو بہتر بنانے میں مدد ملی ہے۔ بجلی کی وزارت ریل اور سڑک کے ذریعے کوئلے کی نقل و حمل میں بھی اضافہ کر رہی ہے۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK