قرض سے آزادی کے بعد ریلائنس کاروبار میں فروغ کیلئے کوشاں

Updated: July 11, 2020, 10:45 AM IST | New Delhi

برٹش پیٹرولیم کے ساتھ معاہدہ ، جوائنٹ وینچرمیں کاروبار کو فروغ دیں گے ،ہندوستانی مارکیٹ میں ایندھن اور طیارہ کے ایندھن کے ریٹیل بزنس کیلئے دونوں کمپنیوں نے ہاتھ ملایا ،ہندوستان میں طیارہ ایندھن کا کاروبار اگلے ۲۰؍ برس میں سب سے تیزی سے بڑھنے والا کاروبار بن سکتا ہے ،۶۰؍ ہزار نئی ملازمتوں کے مواقع پیدا ہونے کی امید۔

Mukesh Ambani. Photo: INN
مکیش امبانی۔ تصویر: آئی این این

مکیش امبانی نے ریلائنس انڈسٹریز کو قرض سے آزاد کرانے کے بعد اب اپنے کاروبار کو مزید تیزی سے بڑھانے کے منصوبے کو حتمی شکل دیتے ہوئےبرٹش پٹرولیم (بی پی) کے ساتھ مل کر ہندوستانی مارکیٹ میں ایندھن اور طیارہ ایندھن کی خردہ فروشی کے لئے ریلائنس ۔ بی پی موبلٹی لمیٹڈ (آر بی ایم ایل) کاایک جوائنٹ وینچر تشکیل دیا ہے۔ اس مشترکہ کمپنی کے ذریعے اگلے ۵؍ برس میں ۶۰؍ہزار نئے روز گار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ واضح رہے کہ ریلائنس کے پاس ابھی ایک ہزار ۴؍سو ریٹیل ایندھن آئوٹ لیٹ ہیں ۔ مشترکہ انٹرپرائز کے تحت آئندہ پانچ برسوں میں ایندھن ریٹیل نیٹ ورک کو بڑھا کرساڑھے پانچ ہزا ر کرنے کا منصوبہ ہے۔ ان کے کھل جانے پر ملک میں ۶۰؍ہزار نئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ فی الحال یہ ۲۰؍ہزار ہیں جو بڑھ کر ۸۰؍ہزار تک پہنچ جا ئیں گے ۔ ری برانڈ نگ کے تحت یہ اسٹیشن جیو بی پی برانڈ کے تحت قائم کئے جائیں گے۔ طیارہ ایندھن کی فیلڈ میں جوائنٹ وینچر کا مقصد اگلے چند برسوں میں اپنی رسائی ۳۰؍ سے۴۵؍ ہوائی اڈوں تک کرنا ہے۔
  یاد رہے کہ گزشتہ اگست میں دونوں کمپنیوں نے جوائنٹ وینچر بنانے کا اعلان کیا تھا۔اب اس کو حتمی شکل دی جائے گی ۔ بیان میں کہا گیا کہ جیو بی پی برانڈ کے تحت اس جوائنٹ وینچر کا مقصد ملک کےایندھن مارکیٹ اور دیگر مارکیٹوں میں ایک بڑی کمپنی بنانا ہے۔ جیو ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کے ذریعے ۲۱؍ ریاستوں میں ریلائنس کی موجودگی اور اس کے لاکھوں صارفین اس سے مستفید ہوں گے۔ جوائنٹ وینچر کے تحت بی پی اپنے اعلیٰ معیاروالے ایندھن ، لیوبریکنٹس ، خردہ اورلو کاربن موبلٹی کا استعمال کرے گا۔ آر بی ایم ایل نے دیگر قانونی منظوری کے ساتھ ٹرانسپورٹ ایندھن کے مارکیٹنگ کے حقوق حاصل کر لئے ہیں اور اب اسے فروغ دینا ہے ۔
 کمپنی کے بیان کے مطابق آئندہ ۲۰؍ برس میں یہ دنیا میں ملک سب سے تیزی سے بڑھنے والا ایندھن کا بازار بن سکتا ہے۔ ملک میں مسافر کاروں کی تعداد میں تقریبا ۶؍ گنا اضافہ ہونے کا اندزہ ہے۔مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ایندھن اور ٹرانسپورٹ کے شعبے کے نئے جوائنٹ وینچر ریلائنس بی پی موبلٹی نے آپریشن کا آغاز کردیا ہے۔ بیان کے مطابق ’’۲۰۱۸ء میں ابتدائی معاہدے کے بعد بی پی اور ریلائنس نے سودے کو منصوبہ بندی کے حساب سے مکمل کرنے کے لئے پچھلے کچھ چیلینجنگ مہینوں کے دوران مل جل کر کام کیا ہے۔‘‘ فی الحال ملک میں ایندھن کی خردہ فروشی میں پبلک سیکٹر کی تیل کمپنیاں غالب ہیں ۔ ملک میں مجموعی۶۹؍ ہزار ۳۹۲ ؍ پیٹرول پمپوں میں سے زیادہ تر ان ہی کے ہیں ۔ سرکاری کمپنیوں انڈین آئل کارپوریشن لمیٹڈ (آئی او سی ایل) ، بی پی سی ایل اور ایچ پی سی ایل کے پاس ۶۲؍ ہزار ۷۲؍ پیٹرو پمپ ہیں ۔ تینوں کمپنیوں کے پاس ملک کے ۲۵۶؍ طیارہ فیول اسٹیشنوں میں سے ۲۲۴؍ہیں ۔ مکیش امبانی نے اس بارے میں کہا کہ خردہ اور طیارہ ایندھن میں ملک بھر میں موجودگی کے لئے ریلائنس - بی پی کے ساتھ اپنی مضبوط اور قیمتی شراکت داری کو بڑھا رہی ہے۔ آر بی ایم ایل کا مقصد متحرک اور کم کاربن والے حل میں سرخیل کپمنی بنانا ہے۔ ڈیجیٹل اور ٹکنالوجی کے ساتھ ہندوستانی صارفین کے لئے صاف اور سستا متادل فراہم کرنا ہمارا مقصد ہے۔
ڈیل کی کچھ اہم باتیں 
برٹش پیٹرولیم نے ریلائنس کے ریٹیل بزنس میں حصہ داری حاصل کرنے اور جوائنٹ وینچر کے لئے ریلائنس کو ایک بلین ڈالرس عطا کئے ہیں ۔ اس طریقے سے برٹش پیٹرولیم اس بزنس میں ۴۹؍ فیصد کی حصہ دار ہو جائے گی ۔
برٹش پیٹرولیم کی ہندوستانی مارکیٹ میں انٹری ریلائنس کے ایندھن بزنس کے ذریعے ہی ہو گی ۔ ملک کا ایندھن مارکیٹ دنیا میں سب سے تیزی کے ساتھ بڑھتا ہوا بزنس قرار دیا جارہا ہے اور برٹش پیٹرولیم نے بالکل درست دائو لگایا ہے۔
ہندوستان میں بہت تیزی کے ساتھ مڈل کلاس اور ہائر مڈل کلاس وجود میں آرہا ہے جو گاڑیوں اور ہوائی سفر کو ترجیح دے رہا ہے۔ ایسےمیں اس طبقہ کی ضرورت کو پورا کرنے کے لئے سرکاری کمپنیاں ناکافی ثابت ہو سکتی ہیں ۔ اسی لئے ریلائنس نے برٹش پیٹرولیم کے ساتھ مل کر اس میدان میں اترنے کا فیصلہ کیا ہے۔ 
واضح رہے کہ مکیش امبانی اپنی تجارتی حکمت عملی کے لئے پوری دنیا میں مشہور ہیں ۔ وہ جیو پلیٹ فارمزکا اعلان کرنے کے بعد سے اب تک ۲۰؍ بلین ڈالرس سے زائد کی سرمایہ کاری حاصل کرچکے ہیں ۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK