آسیان تجارتی معاہدہ متوازن اور باہمی مفاد میں ہونا چاہئے

Updated: September 15, 2021, 11:56 AM IST | Agency | New Delhi

کامرس اینڈ انڈسٹری کی وزیرمملکت انوپریہ پٹیل نے منگل کو۱۸؍ ویں آسیان-ہندوستان اقتصادی میٹنگ کی مشترکہ صدارت کرتے ہوئے کہا کہ کووڈ وبا کے بعد کی صورتحال سے نکلنے میں آسیان ممالک کی ہندوستان مکمل مدد کرے گا،آسیان اور ہندوستان کے درمیان معاشی شراکت داری بڑھانے کی سفارش کی

Minister of State for Commerce and Industry Anupriya Patel.Picture:INN
کامر س اور صنعت کی وزیر مملکت انوپریہ پٹیل ۔ تصویر: آئی این این

 ہندوستان نے آسیان ممالک کے ساتھ مجوزہ تجارتی معاہدہ میں متوازن اور باہمی مفاد کے تحفظ پر زور دیتے ہوئے کہاکہ کووِڈ وبا کے اثرات سے نکلنے میں تنظیم کے رکن  ممالک کی ہر ممکن مدد کی جائے گی۔ کامرس اینڈ انڈسٹری کی وزیرمملکت انوپریہ پٹیل نے منگل کو۱۸؍ ویں آسیان-ہندوستان اقتصادی میٹنگ کی مشترکہ صدارت کرتے ہوئے کہا کہ کووڈ وبا کے بعد کی صورتحال سے نکلنے میں آسیان ممالک کی ہندوستان مکمل مدد کرے گا۔ انہوں نے آسیان ممالک کو صحت اور دوا جیسے شعبوں میں ہندوستان میں سرمایہ کاری کرنے کے لئے مدعو کرتے ہوئے کہاکہ مجوزہ آسیان۔ ہندوستان تجارتی معاہدہ متوازن ہونا چاہئے اور باہمی مفادات کا تحفظ کرنے والا ہونا چاہئے۔ اس میں دونوں فریقوں کی خواہشات شامل ہونی چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ اس پر دونوں فریقوں کو جلد از جلد بات چیت شروع کرنی چاہئے۔ آن لائن منعقدہ اس میٹنگ میں آسیان ہندوستان کاروبار کونسل نے آسیان۔ہندوستان اقتصادی شراکت داری کو بڑھانے کی سفارش کی ہے۔برونئی کے خزانہ اور معیشت کے وزیر ڈاکٹر امین العبداللہ نے میٹنگ کی مشترکہ صدارت کی۔ میٹنگ میں آسیان کے تمام ۱۰؍ ممالک برونئی، کمبوڈیا، انڈونیشیا، لاوس، ملائشیا، میانمار، فلپائن، سنگاپور، تھائی لینڈ اور ویتنام کے اقتصادی وزراء نے حصہ لیا۔ انوپریہ پٹیل نے میٹنگ میں وسیع ٹیکہ کاری، صلاحیت میں اضافہ اور وبا کے چیلنجوں سے نپٹنے کے لئے اقتصادی پہل پر ہندوستان کی موجودہ پالیسیوں کی معلومات دی۔ انہوں نے زراعت، بینکنگ، انشورنس، رسد، کارپوریٹ قانون، سرمایہ کاری انتظامات وغیرہ سمیت مختلف شعبوں میں کی گئی وسیع اصلاحات پر بھی روشنی ڈالی۔ انہوں نے آسیان ممالک کو ہیلتھ اور دوا کے شعبہ سمیت ممکنہ شعبوں میں ہندوستان میں سرمایہ کاری کرنے کیلئے مدعو کیا۔
 مرکزی وزیر نے کہا کہ تجارتی انتظام باہمی، باہمی طورپر فائدہ مند ہونا چاہئے اور دونوں شراکت داروں کی خواہشات کی عکاسی ہونی چاہئے۔ انہوں نے آسیان سے بغیر تاخیر کے ہندوستان- آسیان خدمات اور سرمایہ کاری معاہدہ کا جائزہ لینے کے لئے مشترکہ کمیٹیاں تشکیل دینے کی درخواست کی۔ اس میٹنگ میںصنعت وکامرس کی وزیر مملکت نے آسیان ممالک کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ (ایف ٹی اے)پر نظر ثانی پر زور دیتے ہوئے کہاکہ معاہدہ کی شرائط میں اصلاحات ضروری ہیں تاکہ کسی ملک کے ساتھ ترجیحی رویہ اختیار کرنے پرکسی دوسرے رکن ملک کا نقصان نہ ہو۔ انوپریہ پٹیل نے آسیان کی مارکیٹ میں ہندوستانی برآمدکنندگان کوپیش آنے والی مشکلات کے حوالے سے بھی اصلاحات پر زور دیا اور ٹیرف کے نظام کی طرف توجہ مبذول کرائی ۔  واضح رہےکہ اکتوبر ۲۰۲۱ء میں آسیان ممالک کی ایک کانفرنس ہونے والی ہے۔اس  میٹنگ میں اس کانفرنس میں بھی پوری تیاری کے ساتھ شرکت کا عزم ظاہر کیاگیا ۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK