راہل بھائی کے مشورے سے میری زندگی بدل گئی: پجارا

Updated: June 30, 2020, 9:43 AM IST | Agency | New Delhi

ٹیسٹ ٹیم کے بلے بازنے کہا:راہل دراوڑ کا کرکٹ کے علاوہ کسی اور کی ذاتی زندگی پر توجہ دینے کا مشورہ میرے لئے بہت اہم ثابت ہوا

Rahul Dravid and Pujara - Pic : INN
راہل دراوڑ اور پجارا ۔ تصویر : آئی این این

زبردست جدوجہد کرنے والے ہندوستانی ٹیسٹ بلے باز چیتشور پجارا نے کہا ہے کہ کرکٹ کو ذاتی زندگی سے دور رکھنے کی اہمیت کے بارے میں مشورے دینے پر وہ سابق کرکٹر راہل دراوڑ کا ہمیشہ مشکور رہیں گے جنہوں نے ان کی زندگی کو بدل کر رکھ دیا۔
 پجارا نے کہا کہ راہل دراوڑ کا کرکٹ کے علاوہ کسی اور کی ذاتی زندگی پر توجہ دینے کا مشورہ ان کے لئے بہت اہم ثابت ہوا۔ پجارا نے کرک انفو کو انٹرویو دیتے ہوئے راہل دراوڑ کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کرکٹ سے باہر زندگی کی اہمیت کو سمجھنے میں میری بہت مدد کی۔ میں یہ بھی مانتا تھا کہ کرکٹر کو اپنی ذاتی اور پیشہ ورانہ زندگی کو الگ رکھنا چاہئے لیکن جب میں نے ان سے بات کی تو میرا اعتماد مضبوط ہوگیا۔ ان کے مشورے نے میرے لئے کام کیا اور انہوں نے میری بہت مدد کی۔ 
 انہوں نے کہا کہ میں نے دیکھا کہ کیسے کاؤنٹی کرکٹ میں کھلاڑی اپنی ذاتی زندگی کو کرکٹ سے الگ رکھتے ہیں۔ مجھے ان کے مشوروں کی بہت ضرورت تھی۔ بہت سے لوگوں کا ماننا ہے کہ میں کرکٹ پر زیادہ توجہ دیتا ہوں ، یہ سچ ہے لیکن میں یہ بھی جانتا ہوں کہ کرکٹ کے علاوہ ذاتی زندگی پرکب توجہ دوں۔ میں کرکٹ کے علاوہ زندگی کی اہمیت کو بھی سمجھتا ہوں۔راہل دراوڑ کو اپنا منبع تحریک قرار دیتے ہوئے پجارا نے کہا کہ  میں ایک جملے میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ راہل بھائی میری زندگی میں کتنی اہمیت رکھتے ہیں۔ وہ ہمیشہ سے میرے ترغیب کا وسیلہ رہے ہیں اور رہیں گے۔
  پجارا نے خود کو راہل دراوڑ کا مداح بتایا اور کہا کہ میں ۸؍ سال کے آس پاس تھا جب میں نے پہلی بار راہل بھائی کو بیٹنگ کرتے دیکھا۔ میں نے انہیں ۲۰۰۲ء میں انگلینڈ کے دورہ ہند میں بیٹنگ کرتے دیکھا تھا۔ اس کے بعد انہوں نے ایڈیلیڈ میں ڈبل سنچری اسکور کی جو میری من پسند اننگز ہے۔ وہ ہمیشہ جنگجو کی طرح کھیلتے تھے۔ جب تک راہل بھائی کریز پر موجود تھے حریف ٹیم کیلئے وکٹ لینا بہت مشکل تھا۔ ہندوستان کو آؤٹ کرنے کیلئےحریف ٹیم کے لئے ضروری تھا کہ وہ پہلے ان کا وکٹ لے۔ وہ اننگز کو مضبوطی فراہم کرتے تھے۔
 محنتی بلے باز پجارا نے کہا کہ میں نے ان کی تکنیک اور نوعیت کو قریب سے دیکھا ہے۔ جس طرح سے وہ کرکٹ کے بارے میں بات  چیت کرتے ہیں  انہیں اس کھیل کے بارے میں بہت زیادہ معلومات ہے۔ اس کے باوجود وہ ہمیشہ اپنے کھیل کے انداز کو پیچیدہ نہیں کرتے تھے۔ 
  پجارا نے راہل دراوڑ کے ساتھ اپنے موازنے پرکہا کہ ان سے مستقل رابطے میں رہنے کے باوجود میں نے کبھی بھی ان کی نقل  کرنے کی کوشش نہیں کی۔ ہمارے کھیل کے انداز میں بہت عام ہیں۔ آپ کہہ سکتے ہیں کہ میں نے راہل بھائی سے بہت کچھ سیکھا ہے۔ انہوں نے میرے کھیل کے انداز کو بہت متاثر کیا۔ پجارا نے کہا کہ انہوں نے سوراشٹر کی طرف سے کھیلتے ہوئے بہت کچھ سیکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے سوراشٹر کی طرف سے کھیلتے ہوئے سیکھا تھا کہ صرف سنچری بنانا سب کچھ نہیں آپ کو اپنی ٹیم کو آگے بڑھانا ہوگا۔ اس طرح میں نے اپنی ذمہ داری کو سمجھا کہ ایک بلے باز کی حیثیت سے ٹیم کے اسکور کو اٹھانا ضروری ہے۔
 پجارا نے راہل دراوڑ کو اپنا آئیڈیل بتاتے ہوئے کہا کہ اپنے مثالی کھلاڑی سے ملنا ہمیشہ خاص ہے۔ مجھے یاد ہے کہ میں نے پہلی بار ۲۰۰۶ء میں ان سے ملاقات کی تھی۔ یہ میرے آبائی شہر راجکوٹ میں ریس کورس گراؤنڈ تھا۔ ہندوستان ایک سیریز کی تیاری کر رہا تھا۔ کسی نے ان سے میرا تعارف کروایا۔ 
 انہوں نے کہا کہ میں نے کچھ عرصہ قبل ہندوستان کی انڈر۱۹؍ٹیم اور دیودھر ٹرافی میں کھیلا تھا۔ انہوں نے مجھے بتایا کہ وہ بنگلور میں نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں کسی بھی وقت آکر ان سے بات کرسکتے ہیں۔ پھر اس کے بعد میں نے اپنا پہلا میچ بنگلور میں کھیلا۔۲۰۱۰ء میں آسٹریلیا کیخلاف دوسرے ٹیسٹ میں جیت میرے لئے یادگار رہی۔ میں نے دوسری اننگز میں۷۲؍ رن کی شراکت کی۔ 
 ٹیسٹ ٹیم کے بلے بازچتیشورپجارا نے کہا کہ راہل بھائی کے بارے میں سب سے اہم بات یہ ہے کہ وہ کسی بھی کھلاڑی کی ذہنیت کو آسانی سے سمجھ سکتے ہیں۔ میں بہت خوش قسمت ہوں کہ جب میں نے کرکٹ کھیلنا شروع کیا تو وہ مجھے مشورہ دینے کیلئے ٹیم میں ہمارے ساتھ تھے۔ اس وقت انہوں نے اپنے کریئر میں بہت سے اتار چڑھاؤ دیکھے تھے۔ اس لئے انہوں  نے ہمیشہ مجھے بہتر مشورے دیئے۔ میں اس وقت کافی جوان تھا۔ راہل دراوڑنے مجھے بتایا کہ کرکٹ میں ٹیکنالوجی سب کچھ نہیں ہے۔ جوانی میں ہم اپنی تکنیک پر بہت زیادہ کام کرتے ہیں لیکن انہوں نے مجھے سمجھایا کہ ٹیکنالوجی کے علاوہ کرکٹ کے اور بھی پہلو ہیں۔ 
 اہم بات یہ ہے کہ راہل دراوڑ کو ہندوستانی کرکٹ کی دیوار کہا جاتا تھا۔ راہل دراوڑ نے ٹیسٹ اور ون ڈے کرکٹ میں کئی شاندار اننگز کی بدولت ہندوستان کو فتح کی طرف پہنچایا۔ راہل دراوڑ نے۱۶۴؍ ٹیسٹ کھیلے ہیں، انہوں نے ۵۲ء۳۱؍کے اوسط سے۱۳۲۸۸؍رن  بنائے ہیں جبکہ۳۴۴؍ون ڈے میچوں میں انہوں نے ۱۰؍ہزار سے زیادہ رن بنائے ہیں۔ 

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK