آشوتوش گوواریکر نے ’لگان‘ اور ’سوَدیس‘ جیسی فلموں سے شناخت بنائی

Updated: February 15, 2020, 9:04 AM IST | Mumbai

بالی ووڈ میں آشوتوش گوواریكر کا نام ایک ایسے فلمساز کے طور پر لیا جاتا ہے جنہوں نے اپنی ہدایتکاری میں بنیائی گئی فلموں کے ذریعے ناظرین کے دلوں میں خاص شناخت بنائی ہے۔ مہاراشٹر کے کولہاپور میں ۱۵؍ فروری ۱۹۶۴ء کو پیدا ہونے والے آشوتوش گوواریكر نے اپنے کریئر کا آغاز ۱۹۸۴ء میں کیتن مہتا کی فلم ’ہولی‘ سے بطور اداکار کیا تھا۔ اس فلم میں عامر خان نے بھی اہم کردار نبھایا تھا۔

آشوتوش گوواریکر نے ’لگان‘ اور ’سوَدیس‘ جیسی فلموں سے شناخت بنائی
آشوتوش گوواریکر۔ تصویر: آئی این این

سالگرہ کے موقع پر خراج تحسین
ممبئي :بالی ووڈ میں آشوتوش گوواریكر کا نام ایک ایسے فلمساز کے طور پر لیا جاتا ہے جنہوں نے اپنی ہدایتکاری میں بنائی گئی فلموں کے ذریعے ناظرین کے دلوں میں خاص شناخت بنائی ہے۔ مہاراشٹر کے کولہاپور میں ۱۵؍ فروری ۱۹۶۴ء کو پیدا ہونے والے آشوتوش گوواریكر نے اپنے کریئر کا آغاز ۱۹۸۴ء میں کیتن مہتا کی فلم ’ہولی‘ سے بطور اداکار کیا تھا۔ اس فلم میں عامر خان نے بھی اہم کردار نبھایا تھا۔ اس کے بعد آشوتوش گوواریكر نے ٹی وی پر نشر کچھ سیریل اور فلموں میں کام کیا۔ ۱۹۹۳ء میں ریلیز ہونے والی فلم ’پہلا نشہ‘ بطور ہدایتکار آشوتوش گوواریكر کی پہلی فلم ثابت ہوئی۔ اس فلم میں دیپک تجوری، روینہ ٹنڈن، پوجا بھٹ اور پریش راول نے اہم کردار ادا کئے تھے۔ اگرچہ کمزور اسکرپٹ کی وجہ سے یہ فلم باکس آفس پر کوئی خاص کمال نہیں دکھا سکی۔ ۱۹۹۵ء متیں ریلیز ہونے والی فلم ’بازی‘ بطور ہدایتکار آشوتوش گوواریكر کے کریئر کی پہلی سپر ہٹ فلم ثابت ہوئی۔ اس فلم میں عامر خان نے ایک جانباز پولیس آفیسر کا کردار ادا کیا تھا۔ عامر خان اور ممتا کلکرنی کی جوڑی فلم میں کافی پسند کی گئی تھي۔ ’بازي‘ کی کامیابی کے ساتھ ہی آشوتوش گوواریكر فلم انڈسٹری میں اپنی شناخت بنانے میں کامیاب ہو گئے۔  ۲۰۰۱ء کی فلم ’لگان‘ آشوتوش گوواریكر کے کریئر کی اہم فلموں میں شمار کی جاتی ہے۔ آشوتوش گوواریكر نے جب اس فلم کیلئے عامر خان سے بات چیت کی تو عامر کو فلم کی کہانی اتنی زیادہ پسند آئی کہ انہوں نے اس فلم میں نہ صرف اداکاری کرنے کا فیصلہ کیا بلکہ فلم کو پروڈیو بھی کیا۔ 
 ’لگان‘ نے باکس آفس پر کامیابی کے نئے ریکارڈ قائم کئے۔ اس فلم کیلئے آشوتوش گوواریكر کو بہترین ہدایتکار کا فلم فیئر ایوارڈ دیا گیا۔ ساتھ هي ساتھ نیشنل ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔ ۲۰۰۴ء میں کنگ خان شاہ رخ خان کو لے کر آشوتوش گوواریكر نے فلم ’سودیس‘ کی ہدایتکاری کی۔ ۲۰۰۸ء میں آشوتوش گوواریكر نے اپنی فلم، جس کا انہیں برسوں سے انتظار تھا ’جودھا اکبر‘ کی ہدایتکاری کی۔ اس فلم میں جودھا بائی کا کردار ایشوریہ رائے نے کیا جبکہ اکبر کے کردار میں رِتیک روشن نظر آئے۔ اگرچہ فلم کو باکس آفس پر توقع سے زیادہ کامیابی نہیں مل سکی۔ آشوتوش گوواریکر اس فلم کیلئے بہترین ہدایتکار کے فلم فیئر ایوارڈ سے نوازے گئے۔ 
 ۲۰۰۹ء میں آشوتوش گوواریكر نے پرینکا چوپڑہ اور ہرمن باویجا کو لے کر فلم ’وہاٹ اِز یوور راشی‘ کی ہدایتکاری کی۔ اس فلم میں پرینکا چوپڑا نے ۱۲؍ مختلف کردار نبھائے تھے۔ یہ فلم باکس آفس پر ناکام رہی۔ ۲۰۱۰ء میں آشوتوش گوواریكر نے ایک فلم ’کھیلیں ہم جی جان سے‘ بنائی۔ اس فلم میں ابھیشیک بچن، دیپکا پڈدکون کے اہم کردار تھے لیکن بدقسمتی سے یہ فلم بھی باکس آفس پر کوئی خاص کمال نہیں دکھا سکی۔ اس کے بعد آشوتوش نے ’موهن جوداڑو‘ اور ’پانی پت‘ جیسی فلموں کی ہدایتکاری کی۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK