لال سنگھ چڈھاپر تنازع کیلئےکنگنا نےعامر کو ہی ذمہ دارٹھہرایا

Updated: August 05, 2022, 12:04 PM IST | Agency | Mumbai

 گزشتہ کچھ برسوں سےعامر خان تنقیدوں کی زد پر ہیں اور ان کی فلم ریلیز ہونے سے قبل خصوصی طور پر تنازع پیدا کیاگیاہے۔

Aamir Khan .Picture:INN
عامر خان تصویر:آئی این این

 گزشتہ کچھ برسوں سےعامر خان تنقیدوں کی زد پر ہیں اور ان کی فلم ریلیز ہونے سے قبل خصوصی طور پر تنازع پیدا کیاگیاہے۔ ایسےمیںکچھ فلمی ہستیاں بھی اس طرح کی باتوں میں گویا آگ میں گھی ڈالنے کا کام کررہی ہیں۔ایسی ہی ایک اداکارہ کنگنا رناوت بھی ہیںجوکسی بھی بات پر تنازع پیدا کرنے میں مہارت رکھتی ہیں۔  ایک جانب جہاں عامر خان کی نئی فلم ’لال سنگھ چڈھا‘ کے تعلق سے تنازع پیدا کیا گیا ہے اس پر بھی وہ زہر افشانی سے باز نہیں آئیں۔ بالی ووڈکی متنازع اداکارہ کنگنا رناوت نے مشہور ادا کار اور مسٹر پرفیکشنسٹ عامر خان پر اپنی ’فلم لال سنگھ چڈھا‘ کے بائیکاٹ کی مہم کی منصوبہ بندی کا الزام لگایاہے۔واضح رہے کہ عامر خان کی فلم لال سنگھ چڈھا ۱۱؍ اگست کو ریلیز ہونے والی،  جو۱۹۹۴ءکی ہالی ووڈ فلم ’فاریسٹ گمپ‘ کا آفیشل ہندی ری میک ہے۔عامر خان کی فلم کو اس وقت سوشل میڈیا پر بائیکاٹ مہم کا سامنا ہے، کنگنا رناوت نے موقع کا فائدہ اٹھاتےہوئے اپنے انسٹاگرام اسٹوریز پر ایک نوٹ شیئر کیا ہے۔انہوں نے لکھا کہ ’’میرے خیال میں فلم لال سنگھ چڈھاسےمتعلق مہم چل رہی ساری منفی مہم کے پیچھے بطور ماسٹر مائنڈ عامر خان موجود ہیں۔‘‘انہوں نے مزید لکھا کہ رواں سال صرف مزاحیہ فلم کےسیکوئل کو چھوڑکر کوئی بھی ہندی فلم باکس آفس پر کمال نہیں دکھا سکی،ایسے میں ہالی ووڈ فلم کا ری میک تو ویسے بھی کام نہیں کرے گا۔کنگنا رناوت نے یہ بھی لکھا کہ اب وہ ہندوستان کو عدم برداشت کا شکار کہہ دیں گے، ہمیں ہندوستانی فلم بینوںکا نبض شناس بننا ہوگا، یہ ہندو یا مسلم کا معاملہ نہیں ہے۔اُن کا کہنا تھاکہ عامر خان اس سے پہلے ہندوتوا پر فلم پی کے بنا چکے ہیں،جو ان کی سب سے بڑی فلم تھی، وہ اس کے ذریعے ہندوستان کو عدم برداشت کا حامل قرار دے چکے۔اداکارہ نے کہا کہ گزارش ہے مذہب یا نظریے پر فلم بنانا بند کردیں اور انہیں اپنی بری اداکاری اور بری فلموں سے دور رکھیں۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK