فیس بک کے ڈیسک ٹاپ ورژن میں ڈارک موڈ دستیاب

Updated: March 23, 2020, 11:57 AM IST | Agency

اگر آپ فیس بک کو ڈیسک ٹاپ پر استعمال کرنا پسند کرتےہیں تو اچھی خبر یہ ہے کہ اس کے مکمل طور پر ری ڈیزائن ورژن کو جمعہ سےمتعارف کرانے کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔یہ ری ڈیزائن اس سے قبل صرف فیس بک موبائل ایپ تک محدود تھا مگر گزشتہ سال کمپنی نے سالانہ ڈیولپر کانفرنس میں اسے ڈیسک ٹاپ ورژن کے لیے متعارف کرانے کا اعلان کیا تھا

Facebook - Pic : INN
فیس بک ۔ تصویر : آئی این این

 اگر آپ فیس بک کو ڈیسک ٹاپ پر استعمال کرنا پسند کرتےہیں تو اچھی خبر یہ ہے کہ اس کے مکمل طور پر ری ڈیزائن ورژن کو جمعہ سےمتعارف کرانے کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔یہ ری ڈیزائن اس سے قبل صرف فیس بک موبائل ایپ تک محدود تھا مگر گزشتہ سال کمپنی نے سالانہ ڈیولپر کانفرنس میں اسے ڈیسک ٹاپ ورژن کے لیے متعارف کرانے کا اعلان کیا تھا۔اس نئے ڈیزائن میں فیس بک کے۲؍ اہم ترین فیچرز ایونٹس اور گروپس پر بہت زیادہ توجہ مرکوز کی ہے۔فی الحال یہ صارفین کی مرضی ہوگی کہ وہ نئے ورژن کا استعمال کریں یا کلاسیک ورژن کو ہی ترجیح دیں مگر اس سال کے آخر تک یہ نیا ڈیزائن بائی ڈیفالٹ ہوگا۔کمپنی کا کہنا ہے کہ اگر ابھی یہ نیا ورژن آپ تک نہیں پہنچا تو بہت جلد آپ اسے دیکھ سکیں گے۔گزشتہ سال کے موبائل ری ڈیزائن کی طرح یہ نیا ڈیسک ٹاپ ورژن زیادہ صاف اور سادہ ڈیزائن پر مشتمل ہے جس میں سفید رنگ کی بھرمار ہے۔اس میں بڑے فونٹ اور بہتر آئیکون دکھائے گئے ہیں جبکہ پہلی بار ڈارک موڈ کا آپشن بھی صارفین کے لیے دستیاب ہوگا۔موبائل ایپ کی طرح اب نئے ڈیسک ٹاپ ڈیزائن میں بھی فیس بک کے اہم فیچرز تک فوری رسائی ممکن ہے جبکہ فیس بک اسٹوریز کو اپ ڈیٹ اسٹیٹس باکس کے اوپر منتقل کردیا گیا ہے۔اس کے علاوہ ری ڈیزائن مینیوبار بھی دیا جارہا ہے۔اس ری ڈیزائن کی سب سے نمایاں تبدیلی گروپس کا نیا ٹیب ہے جو مینیو بار میں دیا گیا ہے، جس پر کلک کرکے گروپس کی اپ ڈیٹس پر مبنی فیڈ دیکھناممکن ہوگا، جبکہ صارف کی دلچپسی کو مدنظر رکھ کر نئے گروپس کی سجیشن بھی دی جائے گی۔اگر آپ ابھی اس نئے ڈیزائن کو آزمانا چاہتے ہیں تو اکائونٹ میں لاگ ان ہوکر سیٹنگز میں جائیں اور وہاں سی نیوفیس بک پر کلک کریں۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK