اجمیر:چھٹی کی رسم کےساتھ ہی خواجہ غریب نوازؒ کےعرس کا غیر رسمی طور پر اختتام

Updated: February 20, 2021, 7:32 AM IST | Agency | Ajmer

جمعہ اور چھٹی ایک ساتھ ہونے کی وجہ سے زائرین کی بڑی تعداد پہنچی لیکن سماجی فاصلے کا ہر ممکن خیال رکھا گیا،درگاہ کے صدر دروازے ’نظام گیٹ‘ کے باہر درگاہ دہلی گیٹ تک مصلیان کی بڑی تعداد نظر آئی، سبھی کیلئے انتظامات کئے گئے

Ajmer Sharif - Pic : PTI
اجمیر میںہزاروں مصلیان نماز جمعہ ادا کرتے ہوئے۔(تصویر: پی ٹی آئی

راجستھان کے ضلع اجمیر میں حضرت خواجہ معین الدین  چشتی ’غریب نوازؒ‘ کے ۸۰۹؍ ویں سالانہ عرس کا اختتام  جمعہ کو چھٹی کے قل کی رسم کے ساتھ غیر رسمی طور پر ہو گیا۔ جمعہ اور چھٹی ایک ساتھ آنے کے سبب یہاں شاندار  طریقے سےجمعہ کی نماز بھی ادا کی گئی۔ واضح رہے کہ عرس کا با ضابطہ اختتام۲۲؍فروری کو بڑے قل کی رسم کے ساتھ ہوگا۔ خواجہ غریب نوازؒ کے عرس کی آخری شاہی محفل جمعرات کی رات کو ہوئی اور اس کے بعد سے ہی عقیدت مندوں اور زائرین نے قل کے چھینٹیں لگانا شروع کر دیں۔ آستانے کے در و دیوار کو کیوڑے اور گلاب جل سے دھویا گیا۔ یہ سلسلہ صبح تک جاری رہا۔ صبح پھر محفل خانے میں چھٹی کا فاتحہ آرکاٹ دالان میں ہوا اور قل کی محفل، محفل خانے میں منعقد کی گئی۔ 
 شاہی چوکی کے قوالوں نے رنگ اور بادھوا پڑھا۔ یہ پروگرام روایتی طور پر کئے جانے والے وقت سے ایک گھنٹے قبل قریب سوا بارہ بجے تک پورا کر لیا گیا۔ اس دوران درگاہ کے دیوان زین العابدین آستانے میں آئے اور پھر چھ دنوں سے کھلا ہوا جنتی دروازہ بھی معمور کر دیا گیا۔ اس کے بعد قلندروں نے داغول کی رسم ادا کی اور اپنے گھروں کو  لَوٹنے کا سلسلہ شروع کیا۔  جمعہ اور چھٹی ایک ساتھ ہونے کی وجہ سے زائرین کی بڑی تعداد یہاں پہنچی لیکن اس دوران سماجی فاصلے کا بھرپور خیال رکھا گیا اور عوام کو بھی یہی پیغام دیا گیا کہ وہ بھی اس کا دھیان رکھیں۔ 
 عرس کے موقع پر جمعہ کی نماز قاضی شہر مولانا توصیف احمد صدیقی کی امامت میں ادا کی گئی۔ عوام درگاہ شریف کے اندر سے باہر تک تمام سڑکوں پر جہاں جگہ ملی صف بنا کر بیٹھ گئے اور ٹھیک ایک بج کر دس منٹ پر خطبہ پڑھا گیا اور ایک  بج کر بیس منٹ پر نماز ادا کی گئی۔ نماز میں بڑی تعداد میں زائرین نے شرکت کی۔ درگاہ  کےاحاطے میں چاروں طرف نمازی ہی نمازی بیٹھے نظر آئے۔ اس کے علاوہ درگاہ کے صدر دروازے ’نظام گیٹ‘ کے باہر درگاہ بازار کی جانب، نلا بازار، ڈھائی دن کا جھوپڑا، دھان منڈی، دہلی گیٹ، شوبھراج ہوٹل، یہاں تک کہ گنج تھانے تک نمازیوں کی صفیں نظر آئیں۔ علاوہ ازیں شہر کی کئی مساجد ریلوے اسٹیشن، آرام گاہ، رشی گھاٹی بائی پاس وغیرہ پر بھی عوام نماز ادا کرتے نظر آئے۔ اس دوران انتظامیہ کی جانب سے پختہ انتظامات  کئے گئے تھے۔ قابل ذکر ہے کہ نماز کے بعد بھی زائرین آستانے کی باہری دیواروں کو کیوڑہ، گلاب جل اور عطر سے دھوتے ہوئے نظر آئے۔

ajmer Tags

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK