Inquilab Logo

پارٹی کارکن کے ذریعے ناناپٹولے کے پیر دھوئے جانے پر تنازع

Updated: June 19, 2024, 12:23 AM IST

این سی پی ( اجیت ) نے کہا ’’ نانا پٹولے خود کو سنت اورکارکنان کو نوکرنہ سمجھیں‘‘، بی جے پی نے کانگریس لیڈر سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا

Congress state president Nana Patole (file photo)
کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے ( فائل فوٹو)

 کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے ایک بار پھر تنازع  میں گھرے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔ ان کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے جس میں ایک کانگریس کارکن کو پٹولے کے پیر دھوتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ یہ ویڈیو اکولہ کا ہے جہاں  پیر کو پٹولے دورے پر گئے تھے اور بارش کے سبب  ان کے پیر کیچڑ میں لت پت ہو گئے تھے۔ بی جے پی اور این سی پی ( اجیت) نے اس ویڈیو کے تعلق سے کانگریس لیڈر پر تنقید کی ہے۔ 
  اطلاع کے مطابق ناناپٹولے پیر کے روز ایک تقریب میں شرکت کیلئے اکولہ  کے وڈیگائوں علاقے میںگئے تھے جہاں نانا  پٹولے کو لڈوئوں کے ساتھ تولا گیا اور ان لڈوئوں کو تقسیم کیا گیا۔   اس کے بعد خواتین میں ساڑیاں تقسیم کی گئیں۔ یہ تقریبات کانگریس کارکن پرمود ڈونگرے نے منعقد کی تھیں۔ اس تقریب کے بعد پٹولے  ایک مذہبی پروگرام میں شرکت کیلئے نانا صاحب چنچولکر کالج کے گرائونڈ پر پہنچے۔ بارش کے سبب وہاں کیچڑ ہو گیاتھا لیکن پٹولے نے کیچڑ کی پروا نہ کرتے ہوئے وہاں پالکھی کے درشن کئے اس کے بعد باہر نکلے لیکن ان کے پیر کیچڑمیں لت پت ہو چکے تھے۔ پٹولے جب اکولہ سے ناگپور روانہ ہونے کیلئے اپنی گاڑی میں بیٹھے تو ان کے پیر دھلوانے کیلئے پانی منگوایا گیا۔ ایک کانگریسی کارکن وجے گُروَ نے اپنے ہاتھوں سے مل کر ان کے پیر دھوئے۔ اس دوران ایک بھی بار نانا نے انہیں روکا نہیں۔ ان کا یہ ویڈیو وائرل ہو گیا اور مخالفین کو تنقید کا موقع ہاتھ آ گیا۔ 
  این سی پی ( اجیت) کے  رکن اسمبلی امول مٹکری   نے کہا ہے کہ ’’ میں نانا پٹولے سے صرف اتنا کہنا چاہتا ہوں کہ وہ خود کو سنت نہ سمجھیں۔   مجھے کارکنان سے بھی ایک بات کہنی ہے کہ جمہوریت میں کوئی آپ کا مالک نہیں ہوتا۔  اس لئے میری گزارش ہے کہ جوش میں کوئی بھی اس طرح کا کام نہ کرے۔‘‘ امول مٹکری نےکہا ’’ مجھے نانا پٹولے سے یہ سوال کرنا ہے کہ کیا یہ اقتدار کی مستی ہے؟‘‘ حالانکہ پٹولے اقتدار میں نہیں ہیں بلکہ خود امول مٹکری اقتدار میں ہیں۔ ان کے علاوہ بی جے پی لیڈر رام کدم نے بھی پٹولے پر تنقید کی ہے۔ انہوں نے کہا ’’ ایک طرف  ملک کے پردھان سیوک(خادم اعلیٰ) نریندر مودی تو دوسری طرف گھمنڈیا اتحاد کے  ریاستی صدر ۔ دنیا کے سب سے طاقتور لیڈر ہونے کے باوجود وزیر اعظم نریندر مودی معمولی سے معمولی آدمی کیلئے احترام اور ہمدردی ظاہر کرتے ہیں جبکہ کانگریس کے ریاستی صدر نے پیر میں ذرا سی مٹی لگنے پر پارٹی کارکن سے پیر دھلوائے۔ انہیں فوراً معافی مانگنی چاہئے۔‘‘

congress Tags

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK