یو پی اے نے اقتدار سے بےدخل ہونےکا غصہ نتیش پرنکالا، بہارکی ترقی میں رخنہ ڈالا: مودی

Updated: October 23, 2020, 4:37 PM IST | Agency | Patna

وزیراعظم نریندر مودی نے راشٹریہ جنتادل ( آرجے ڈی ) اور کانگریس کانام لئے بغیر ان پر جم کر حملہ بولا اور کہاکہ بہار کی عوام نے جب انہیں پندرہ سال بعد اقتدار سے بے دخل کر دیا تو مرکز کی متحدہ ترقی پسند اتحاد ( یو پی اے ) حکومت میں شامل ان جماعتوں نے اپنا غصہ نتیش حکومت پر نکالا اور اس ریاست کی ترقی میں رخنہ اندازی کی ۔

PM Modi - Pic : PTI
پی ایم مودی ۔ تصویر : پی ٹی آئی

وزیراعظم نریندر مودی نے راشٹریہ جنتادل ( آرجے ڈی ) اور کانگریس کانام لئے بغیر ان پر جم کر حملہ بولا اور کہاکہ بہار کی عوام نے جب انہیں پندرہ سال بعد اقتدار سے بے دخل کر دیا تو مرکز کی متحدہ ترقی پسند اتحاد ( یو پی اے ) حکومت میں شامل ان جماعتوں نے اپنا غصہ نتیش حکومت پر نکالا اور اس ریاست کی ترقی میں رخنہ اندازی کی ۔
 مودی نے جمعہ کو رہتاس ضلع کے سہسرام سے بہار کے 25 اسمبلی حلقوں کے قومی جمہوری اتحاد ( این ڈی اے ) امیدواروں کے حق میں منعقدہ اپنی پہلی انتخابی ریلی میں تقریر کی شروعات بھوجپوری زبان میں کی اور کہا” بہار کے سوابھیمانی اور محنتی بھائی بہن، انداتا محنت کشن کسان آپ سبھے کے پرنام ۔ ہم ای گورو شالی دھرتی کے ہم نمن کرتانی ۔ ماں منڈیشوری ماتا کے ای پاون بھومی پر روا سب کے ابھینندن کرتانی “ انہوں نے آرجے ڈی اور کانگریس پر اشاروں ۔ اشاروں میں نشانہ لگایا اور کہاکہ ان لوگوں نے اپنے پندرہ سالہ مدت کار میں بہار کو لوٹا اور اس کی بے عزتی کی ۔ یہاں عوام نے انہیں یقین کے ساتھ اقتدار سونپا تھا لیکن انہوں نے اقتدار کو اپنی تجوری بھرنے کا ذریعہ بنالیا۔
وزیراعظم نے کہاکہ جب بہار کے لوگوں نے پندرہ سال بعد انہیں اقتدار سے بے دخل کیا اور نتیش کمار کی قیادت میں این ڈی اے کی حکومت بنائی تو یہ لوگ بوکھلا گئے۔ انہیں کافی غصہ آیا اور ان کے من میں زہر بھر گیا ، اس کے بعد دس سال تک ان لوگوں نے مرکز میں این ڈی اے حکومت میں رہتے ہوئے بہار کے لوگوں کے تئیں اپنا غصہ بہار پر نکالا ۔ یو پی اے حکومت کے توسط سے ان لوگوں نے بہار کی ترقی کی راہ میں نہ صرف رخنہ ڈالا بلکہ پورے ترقیاتی عمل کو متاثر کر دیا ۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK