آج ہندوستان اور نیوزی لینڈ میں فیصلہ کن معرکہ

Updated: February 01, 2023, 1:30 PM IST | Ahmedabad

ٹیم انڈیا ٹی ۲۰؍ سیریز کے آخری میچ میں کیویز کو دھول چٹانے کیلئے تیار۔ ہندوستان کو نئے کھلاڑیوں سے بہتر کھیل کی توقع

Team India`s young bowlers thinking about Wednesday`s match
ٹیم انڈیا کے نوجوان گیندباز بدھ کے میچ کے بارے میں سوچتےہوئے

 میزبان ملک کے نوجوان ٹاپ آرڈر بلے بازوں پر دباؤ ہو گا کہ وہ بدھ کو یہاں نیوزی لینڈ کے خلاف تیسرے اور فیصلہ کن ٹی۲۰؍  بین الاقوامی  میچ میں کھیلیں گے۔ ہندوستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان بدھ کو فیصلہ کن معرکہ کھیلے جائے گا۔ یہ کہنا درست ہے کہ روہت شرما، وراٹ کوہلی اور لوکیش راہل جیسے تجربہ کار کھلاڑیوں کی غیر موجودگی میں شبھمن گل، ایشان کشن اور راہل ترپاٹھی ملنے والے  مواقع سے فائدہ اٹھانے میں ناکام رہے ہیں۔
 بدھ کے میچ کے بعد ہندوستان طویل عرصے تک ٹی ۲۰؍ بین الاقوامی میچوں سے دور رہے گا۔ نوجوانوں کے پاس آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز سے پہلے سلیکٹرس کو متاثر کرنے کا آخری موقع ہے۔ ایشان بنگلہ دیش میں اپنی ڈبل سنچری کے بعد سے بلے سے فارم  تلاش کرنے میں ناکام رہے ہیں جبکہ گل  نے اسپن ہوتی ہوئی  گیند کے خلاف بھی جدوجہد کی ہے۔ گل ٹی ۲۰؍ میں ون ڈے فارمیٹ میں اس فارم کو دُہرانے میں ناکام رہے ہیں۔
 ترپاٹھی کوہلی کی غیر موجودگی میں ملنے والے مواقع سے فائدہ نہیں اٹھا سکے جو باقاعدگی سے تیسرے نمبر پر بلے بازی کرتے ہیں۔ اتوار کو سوریہ کمار یادو اور ہاردک پانڈیا کی اننگز کی بدولت ہندوستان نے بڑی مشکل سے۱۰۰؍رن کا ہدف حاصل کیاہے۔ سیریز کی پچوں کا جائزہ لیا جا رہا ہے اور یہ دیکھنا باقی ہے کہ کیا کھلاڑی ایک بار پھر نریندر مودی اسٹیڈیم میں اسپنر س کیلئے مددگار پچ پر اچھی کارکردگی پیش کرپائیں گے یا نہیں۔
 گیندبازی شعبے میں یزویندر چہل اور کلدیپ یادو کے امتزاج نے ہندوستان کو اپوزیشن پر دباؤ ڈالنے میں مدد کی ہے۔ دوسرے ٹی۲۰؍ میں چہل کو صرف ۲؍اوورس کرواتے ہوئے دیکھنا حیران کن تھا حالانکہ پچ نے ان کی بہت مدد کی یہاں تک کہ لیگ اسپنر نے اوپنر فن ایلن کو آؤٹ کر دیا۔ تیز گیند باز ارشدیپ سنگھ نئی  گیندباز کے ساتھ جدوجہد کرنے کے بعد لکھنؤ میں اچھے رابطے میں نظر آئے ، جس سے فیصلہ کن معرکہ سےپہلے ان کے حوصلے کو بڑھانا چاہئے۔
 اس سیریز کے ساتھ ٹیم میں لوٹنے والے  پرتھوی شا کو موقع دینے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے لیکن فیصلہ کن میچ میں کپتان ہاردک پانڈیا کے پلیئنگ الیون میں کوئی تبدیلی کرنے کا جوکھم نہیں لیں گے۔ دوسری جانب نیوزی لینڈ کو اپنے مڈل آرڈر سے بہتر کارکردگی کی امید ہوگی۔ ہندوستان میں سیریز جیتنے کا کارنامہ نیوزی لینڈ کی ٹیم کی حوصلہ افزائی  کیلئے کافی ہے۔ گلین فلپس اب تک اپنی جارحانہ بیٹنگ فارم پیش نہیں کر سکے ہیں اور ٹیم بدھ کو ان سے میچ جتانے  والی اننگز کی توقع کرے گی۔
 ون ڈے سیریز میں شاندار کارکردگی پیش کرنے والے مائیکل بریسویل سے بھی بڑی اننگز کھیلنے کی امید ہے۔ تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنے والے مارک چیپ مین کی بھی بڑی اننگز پر نظریں ہیں۔نیوزی لینڈ نے آخری میچ میں ۸؍گیندبازوں کا استعمال کیاہے جس میں ۴؍ اسپنرس نے اپنے اوورس کا کوٹہ پورا کیاہے۔ ۲؍سال پہلے احمد آباد میں کھیلے گئے آخری ٹی ۲۰؍ میں۲۰۰؍ سے زیادہ رن بنائے گئے تھے اور لکھنؤ میں کم اسکور والے میچ کے بعد شائقین ایک بار پھر بڑے اسکور دیکھنے کی امید کر رہے ہوں گے۔
  ہندوستان کا ممکنہ اسکواڈ: ہاردک پانڈیا (کپتان)، سوریہ کمار یادو(اوپنر)، ایشان کشن، شبھمن گل، پرتھوی شا، دیپک ہڈا، راہل ترپاٹھی، جتیش شرما، واشنگٹن سندر، کلدیپ یادو، یزویندر چہل، ارشدیپ سنگھ، عمران ملک، شیوم ماوی اور مکیش کمار۔نیوزی لینڈکا ممکنہ اسکواڈ: مشیل سینٹنر (کپتان )، فن ایلن، مائیکل بریسویل، مارک چیپ مین، ڈیون کونوے، ڈین کلیور، جیکب ڈفی، لوکی فرگیوسن، بینجمن لیسٹر، ڈیرل مشیل، گلین فلپس، مائیکل ریپن، ہنری شپلی، ایش سوڈھی (اسپن گیندباز) اور بلیئر ٹِنر۔

متعلقہ خبریں

This website uses cookie or similar technologies, to enhance your browsing experience and provide personalised recommendations. By continuing to use our website, you agree to our Privacy Policy and Cookie Policy. OK